گیس 64فیصد مہنگا کرنے کا فیصلہ عوام کے ساتھ ظلم ہے،ڈاکٹر وسیم اختر

گیس 64فیصد مہنگا کرنے کا فیصلہ عوام کے ساتھ ظلم ہے،ڈاکٹر وسیم اختر

 لاہور(سٹاف رپورٹر)پارلےمانی لےڈرصوبائی اسمبلی و امیرجماعت اسلامی پنجاب ڈاکٹرسیدوسیم اختراور سیکرٹری جنرل نذیر احمد جنجوعہ نے اوگراکی جانب سے یکم جنوری سے گیس64فیصد مہنگی کرنے کے فیصلے کی شدیدالفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہاہے کہ ملک میں پہلے ہی صارفین کو گیس میسر نہیں۔لوگ لکڑیاں جلاکر اپناگزربسر کرنے پر مجبور ہیں ایسے میں گیس مہنگی کرنے کا ظالمانہ فیصلہ عوام کے زخموں پر نمک پاشی کے مترادف ہے۔حکمران ایسے اقدامات سے گریز کریں جن سے عوامی مسائل میں کمی کی بجائے اضافہ ہو۔انہوں نے کہاکہ گیس کی عدم فراہمی سے ملک میں صنعتی شعبہ بند ،نظام زندگی مفلوج ہوگیا ہے

اور لاکھوں مزدور بے روزگار ہوچکے ہیں۔حکومتی ناقص پالیسیوں کی بدولت ملکی مصنوعات انٹرنیشنل مارکیٹ میں دیگرممالک کامقابلہ کرنے سے قاصر ہےں۔اسٹیٹ بنک کی رپورٹ کے مطابق ٹیکسٹائل سیکٹرکے قرضے563ارب روپے تک پہنچ چکے ہیںشعبہ ٹیکسٹائل میں سب سے زیادہ سپننگ سیکٹر نے 435ارب روپے قرض لیا۔نیٹ ویئر نے 29 ارب ، شعبہ قالین سازی نے 5ارب 52کروڑ روپے قرض لے رکھاہے۔گزشتہ سال ٹیکسٹائل مصنوعات کی مجموعی برآمدات پانچ ارب 83کروڑ ڈالرز کی تھیں جبکہ رواں سال13کروڑڈالرز کی کمی کے ساتھ مجموعی برآمدات کم ہو کر پانچ ارب 64کروڑڈالر پر آچکی ہیںجوکہ حکومت کی بدترین کارکردگی کامظہر ہے۔                

مزید : میٹروپولیٹن 4