دینی مدارس اسلام کے قلعے ہیں،مولانا گوہر شاہ

دینی مدارس اسلام کے قلعے ہیں،مولانا گوہر شاہ

چارسدہ (بیورورپورٹ) دینی مدارس کو ٹارگٹ اور ہراساں کرنے کی کوشش کی گئی تو اس کے بھیانک نتائج برآمد ہونگے ۔ کسی کو مساجد میں رہائش پذیر افغان طلبہ کو تنگ کرنے کی اجازت نہیں دینگے ۔ اس سلسلے میں مجلس عمل تحفظ علماء و مدارس ضلع چارسدہ کا ایک اجلاس زیر صدارت مولانا غلام محمد صادق ، ضلعی امیر مجلس عمل تحفظ علماء و مدارس منعقد ہو ا۔ اجلاس میں جمعیت علمائے اسلام کے رکن قومی اسمبلی مولانا سید گوہر شاہ ، مفتی حسن جان ،سابق ایم پی اے مولانا محمد ادریس ، جے یو آئی کے ضلعی جنرل سیکرٹری مفتی پیر گوہر علی ، مولانا محمد آیاز حقانی کانگڑہ کے علاوہ درجنوں مہتممین اور علماء نے شرکت کی ۔

اجلاس میں سانحہ پشاور کی شدید الفاظ میں مذمت کی گئی اور کہا گیا کہ یہ تاریخ کا افسوسناک واقعہ ہے تاہم بعض عناصر دینی مدارس کے خلاف زہر افشانی کرکے اپریشن اور کاروائیوں کی راہ ہموار کر رہے ہیں جس کی کسی بھی صورت میں اجاز ت نہیں دینگے ۔ اجلاس میں واضح کیا گیا کہ مساجد میں رہائش پذیر افغان طلبہ کو تنگ کرنے کرنے سے گریز کیا جائے اور کسی بھی کاروائی کی صورت میں متعلقہ پیش امام سے پیشگی اجاز ت لی جائے ۔ اجلاس میں ایک کمیٹی تشکیل دی گئی جو ضلعی انتظامیہ کے ذمہ دار افسران سے ملاقات کرکے انہیں دینی مدارس کے مہتممین اور علماء کے خدشات سے آگاہ کرے گی ۔

مزید : علاقائی