غریبوں کو دوست اور دشمن میں تمیز کرنا ہو گی ورنہ مسائل سے دو چار رہیں گے ،سراج الحق

غریبوں کو دوست اور دشمن میں تمیز کرنا ہو گی ورنہ مسائل سے دو چار رہیں گے ،سراج ...

                      لاہور(سٹاف رپورٹر ) عوامی رکشہ یونین نے لاہور ٹرانسپورٹ کمپنی کی جانب سے بلا جواز چالا ن اور ایل پی جی مارکیٹنگ کمپنیوں و ڈسٹر ی بیو ٹرز مافیا کی جانب سے ایل پی جی کی قیمتوں میں ہوشر با مصنوعی اضافہ پر سر اپا احتجا ج بنتے ہوئے گزشتہ روز ناصر باغ تا اسمبلی ہال تک ہزاروں رکشوںکی ریلی کی نکالی گئی جس میں امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق بھی رکشہ چلاتے ہوئے چیئرمین مجیدغوری کے ساتھ احتجاجی ریلی کی قیادت کرتے رہے ۔ریلی کے شر کاءنے ڈی سی او لاہور کو دہ ہفتے کا الٹی میٹم دیتے ہوئے با آور کروایا ہے کہ اگر ہمارے مطالبات پر نظر ثانی نہ کی گئی تو وزیر اعلی ہاﺅ س کے سا منے ہزاروں رکشہ ڈرائیورز اور ان کے اہل خانہ دھر نا دیں گے ۔مظاہرین سے خطا ب کر تے ہوئے مجید غوری نے کہا کہ رکشہ والوں کو حقیر سمجھنے والے آج جان لیں کہ ہم معاشرے کے ناصرف مفید شہری ہیں بلکہ ہم اب متحد اور منظم بھی ہوچکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایل ٹی سی ہمارے چالان فوری طور پر بند کردے صرف ٹریفک پولیس ہی ہمارے چالان کرے۔ ایل پی جی اور پرچی مافیا لاہور شہر سے اپنا بستر گو ل سمجھے۔دھونس دھاندلی سے غریب رکشہ ڈارئیوروں کو ہراساں کرنے والے انتظامیہ کے لوگ اپنا رویہ درست کر لیں ایل ٹی سی والوں کو 15دن کا وقت دیتے ہیں۔وہ رکشہ والوں کے چالان بندکر دیں ورنہ وزیراعلیٰ ہاﺅس کے سامنے احتجاجی کیمپ لگائیں گے جس میں امیر جماعت اسلامی پاکستا ن سراج الحق بھی ہمارے ساتھ مطالبات کی منظوری تک خیموں میں قیام کریں گے ۔اس موقع پر عوامی رکشہ یونین کے صدر حافظ مظہر جیلانی نے اپنے خطاب میںسراج الحق کی ریلی میں شرکت پر ان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ سراج الحق نے آج غریب رکشہ ڈرائیوروں کی ریلی میں شرکت کرکے ثابت کردیا ہے کہ صرف جماعت اسلامی ہی غریبو ں کے مسائل حل کرنے میںسنجیدہ ہے۔ امیر جماعت سراج الحق نے اپنے خطاب میں کہا کہ ہمارے ملک میں اشرافیہ کا قبضہ ہے کوئی غریب کا پرسان حال نہیں۔غریب اپنی کمائی باہر کے ملک میں کماتا ہے ا پنے وطن بھیجتا ہے جبکہ یہاں کے حکمران پیسہ یہاں سے لوٹتے ہیں اور اسے باہر کے ملکوں میں جمع کرواتے ہیں۔ اب غریبوں کو اپنے دشمن اور دوست میں تمیز کرنا پڑے گی ورنہ وہ ہمیشہ مسائل اور پریشانیوں سے دو چار رہیں گے۔

مزید : صفحہ اول