پناہ گزینوں کی خاطر سعودی سیحا کی دریائے ٹیمز میں پیراکی

پناہ گزینوں کی خاطر سعودی سیحا کی دریائے ٹیمز میں پیراکی

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

جدہ (این این آئی)سعودی عرب سے تعلق رکھنے والی ایک خاتون ڈینٹل سرجن مریم صالح بن لادن کا شمار اندرون اور بیرون ملک جذبہ انسانی سے سرشار ان مسیحاؤں میں ہوتا ہے جو قید وزمان ومکان سے ماورا ہو کر دکھی انسانیت کے لیے اپنا سب کچھ وقف کردیتے ہیں۔ ڈاکٹر مریم صالح بن لادن ایک عرصے سے شامی پناہ گزینوں کے لیے مفت خدمات فراہم کرنے میں سرگرم ہیں۔ویسے تو انہوں نے زیادہ وقت اردن کے ہرالارزوق میں قائم پناہ گزین کیمپ کے 55 ہزار مکینوں کو طبی امداد پہنچانے میں گزارا۔ ان کے ساتھ اس عظیم مشن میں اردن کیفلاحی ادارے ’ای ایم سی‘ بھی پیش پیش رہا ہے۔عرب ٹی وی کے مطابق ڈاکٹر مریم بن لادن پیراکی کی بھی حد درجہ دلدادہ ہیں مگر انہوں نے پیراکی کے شوق کو بھی شامی پناہ گزینوں کے ساتھ یکجہتی کے ساتھ جوڑ کر پیراکی کو شامی متاثرین کی مدد کا ایک نیا ذریعہ بنایا ہے۔ انہوں نے برطانیہ اور ترکی سمیت کئی مقامات پر دریاؤں میں پیراکی کے ذریعے عالمی برادری کی توجہ شامی پناہ گزینوں کی طرف مبذول کرانے کا بیڑا اٹھایا اور وہ اپنے مقصد میں کافی حد تک کامیاب رہی ہیں۔ڈاکٹر مریم کا کہنا تھا کہ انہوں نے اپنے عزم سے یہ ثابت کیا ہے کہ مملکت سعودی عرب کی خواتین بھی جذبہ انسانی اور انسانیت کی خدمت کے باب میں کسی دوسرے ملک کی خواتین سے پیچھے نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں نے دین حنینف کی تعلیمات پرعمل پیرا رہتے ہوئے نہ صرف طب کی دنیا میں کام کیا بلکہ اسپورٹس کی سرگرمیوں میں بھی بڑھ چڑھ کر حصہ لیا ہے۔ یہ ثابت کیا ہے کہ سعودی خواتین بھی اپنے عزم اور ارادے پر ڈٹ جائیں تو اپنے خواب شرمندہ تعبیر کرسکتی ہیں۔
اردن میں شامی پناہ گزینوں کے لیے مفت طبی مرکز کیقیام کے بارے میں بات کرتے ہوئے ڈاکٹر مریم نے کہا کہ شامی پناہ گزینوں کی خدمت کے ضمن میں یہ ایک اہم قدم ہے اور وہ اپنے اس مرکز میں تمام مریضوں کو مکمل طور پر مفتی طبی امداد مہیا کررہی ہی ہیں۔

مزید :

عالمی منظر -