وفاق خیبرپختونخوا سمیت چھوٹے صوبوں کی حق تلفی کر رہی ہے :عنایت اللہ

وفاق خیبرپختونخوا سمیت چھوٹے صوبوں کی حق تلفی کر رہی ہے :عنایت اللہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


پشاور (سٹاف رپورٹر) خیبر پختونخوا کے سینئر وزیر برائے بلدیات و دیہی ترقی عنایت اﷲنے کہا ہے کہ وفاقی حکومت خیبر پختونخوا سمیت چھوٹے صوبوں کی حق تلفی کررہی ہے اور ہمارے جائز مطالبات و حقوق حتیٰ کہ اسمبلی کی قراردادوں کو بھی ردی کی ٹوکری میں پھینک رہی ہے جو ایک افسوس ناک امر ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے نجی ہوٹل پشاور میں مزدوروں کی نمائندہ تنظیم پاکستان ورکرز فیڈریشن کے زیر اہتما م ایک روزہ ورکشاپ سے بحیثیت مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ورکشاپ میں ممبران صوبائی اسمبلی اور مختلف مزدور تنظیموں کے رہنماؤوں نے شرکت کی اور انہوں نے مطالبہ کیا کہ ادارہ ای او بی آئی کو وفاق کے پاس ہی رہنے دیا جائے تاکہ خیبر پختونخوا کے دیگر صوبوں میں کام کرنے والے مزدوروں کو مراعات و سہولیات میسر رہیں کیونکہ یہ خیبر پختونخوا کے 8لاکھ 60ہزاروں مزدوروں کے معاش اور مراعات کا معاملہ ہے۔ سینئروزیر نے کہا کہ صوبہ خیبر پختونخوا بجلی اور گیس کی پیداوار میں خود کفیل ہے لیکن ناانصافی اور وسائل کی نامناسب تقسیم کے باعث یہ پھر بھی بدحالی کا شکار ہے ۔انہوں نے واضح کیا کہ صوبوں کے وسائل ہڑپ کرنے سے وفاق مضبوط نہیں ہوتا اور نہ ایسے طریقے سے فیڈریشن چلائی جا سکتی ہے بلکہ اس طرح ملک کمزور ہوتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہم سمجھتے ہیں کہ خیبر پختونخوا سمیت گلگت و بلتستان کو بھی وسائل میں اپنا جائز حصہ دینا چاہئیے تاکہ پورے ملک میں یکساں ترقی اور خوشحالی کا خواب شرمندہ تعبیر ہو سکے۔سینئر وزیر بلدیات نے کہا کہ صوبائی حکومت کو محنت کشوں اور مزدوروں کے مسائل و مشکلات کا مکمل ادراک ہے اور ان کا ازالہ کرنے کیلئے عملی اقدامات اٹھارہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ انسانی قوانین و پالیسیاں آسمانی صحیفے نہیں ہوا کرتے بلکہ ان پر نظر ثانی کی گنجائش ہوتی ہے ۔موجودہ صوبائی حکومت مزدوروں کی فلاح کے سلسلے میں اٹھائے گئے اقدامات کی مکمل حمایت کرتی ہے اور اس ضمن میں محنت کشوں کے ساتھ بھرپور تعاون جاری رہے گا۔