چارسدہ کی تاجر برادری ناکردہ گناہ کی پاداش میں پابند سلاسل

چارسدہ کی تاجر برادری ناکردہ گناہ کی پاداش میں پابند سلاسل

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


چارسدہ (بیورو رپورٹ)انتظامیہ کی بے جا اقدامات اور قید و جر مانوں سے تاجر سات دن سے پابند سلاسل ہیں ۔ مقید تاجران کو فوری طور پر رہا کرکے تاجر برادری میں پائی جانی والی بے چینی دور کر ائی جائے بصورت دیگر تاجر برادری راست اقدام پر مجبور ہو گی ۔ ان خیالات کا اظہار تاجر اتحاد ضلع چارسدہ کے صدر افتخار حسین صراف ، جنرل سیکرٹری حبیب اللہ ، مرکزی رہنماء لعل محمد اور عطاء الرحمان نے ضلعی انتظامیہ کی طرف سے 7دن سے جیل میں بند تاجروں کے اقدام کی مذمت کر تے ہوئے ا نتظامیہ سے پر زور مطالبہ کیا ہے کہ مقید تاجران کو فوری طور پر رہا کیا جائے بصورت دیگر تاجر برادری احتجاج کرنے میں حق بجانب ہو گی ۔ انہوں نے کہا کہ چارسدہ اور دیگر بازاروں میں انتظامیہ کے طرف سے آئے روز بے جا جرمانوں اور چھاپوں سے چارسدہ کے تاجر برادری کا معاشی قتل کیا جارہا ہے ۔ایک طرف تاجر برادری پر ٹیکسوں کا بھر مار ہے تو دوسری طر ف تمام سرکاری ادارے جس میں ٹی ایم اے ، ضلعی انتظامیہ ، ڈسٹرکٹ فوڈکنٹرولر ،لیبر ڈیپارٹمنٹ اور واپڈا تاجروں کو دونوں ہاتھوں سے لوٹ رہی ہے ۔ 200روپے جرمانے کی ایکٹ تبدیل کر ا کے اپنی مرضی سے دفعات لاگو کئے جا تے ہیں جس سے تاجروں کو بھاری جرمانوں اور قید و بند کے سزاؤں سے دبایا جا رہا ہے جو ہر لحاظ سے قابل مذمت ہے ۔انہوں نے کہا کہ جب سرکاری حکام خود قانون کے پابندی نہیں کرتے ہو پھر تاجر برادری سے قانون کی کیا توقع رکھے ۔ انہوں نے وزیر اعلی خیبر پختونخوا پر ویز خٹک اور چیف جسٹس پشاور ہا ئی کورٹ سے مطالبہ کہ خدرا چارسدہ کے حال پر رحم فرما کر تاجروں کو روزگار چھوڑنے پر مجبور نہ کیا جائے ۔