سندھ حکومت تعاون کرے تو گیس بحران حل ہو سکتا ہے:پٹرلیم ڈویژن

سندھ حکومت تعاون کرے تو گیس بحران حل ہو سکتا ہے:پٹرلیم ڈویژن

  



اسلام آباد (این این آئی)ترجمان پٹرولیم ڈویژن نے کہا ہے کہ میڈیا میں مجموعی گیس طلب و رسد کے اعداد وشمار کو غلط طریقے سے پیش کیا جا رہا ہے،اگر سندھ حکومت تعاون کرے تو سندھ میں گیس کا بحران حل ہوسکتا ہے۔سندھ وزراء کے بیانات پر ترجمان پٹرولیم ڈویژن نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ میڈیا میں مجموعی گیس طلب و رسد کے اعداد وشمار کو غلط طریقے سے پیش کیا جا رہا ہے۔ ترجمان کے مطابق غیرمنظم گیس طلب 6 ارب کیوبک فٹ ہے جبکہ اصل سیل گیس طلب بمعہ آر ایل این جی 4.5ارب کیوبک فٹ ہے،گیس شارٹ فال 1.5 ارب کیوبک فٹ ہے۔ ترجمان نے کہا کہ حکومتِ سندھ سے رائٹ آف وے نہ ملنے کیوجہ سے عائشہ، آمنہ اور آمنہ نارتھ گیس فلیڈز سے ترسیل ممکن نہیں۔حکومتِ سندھ کو رائٹ آف وے کیلئے پٹرولیم ڈویژن کی طرف سے پچھلے آٹھ مہینے میں کئی خطوط لکھے گے مگر کوئی جواب نہ ملا۔ترجمان نے کہا کہ جنوری میں رذک گیس فیلڈ سے 40 لاکھ کیوبک فٹ گیس ترسیل کا عمل شروع ہو جائے گا،سوئی سدرن سے 1160 لاکھ کیوبک فٹ گیس ترسیل جاری ہے۔ترجمان نے کہا کہ سوئی سدرن سے سیل گیس طلب 1260 لاکھ کیوبک فٹ ہے،سوئی سدرن کو 75 لاکھ کیوبک فٹ گیس شاٹ فال کا سامنا ہے۔ترجما ن نے کہا کہ سوئی ناردرن سے گیس ترسیل 2121 لاکھ کیوبک فٹ ہے،سوئی ناردرن کے صارفین کی گیس طلب 2100 لاکھ کیوبک فٹ ہے۔ترجمان نے کہا کہ سوئی ناردرن کا شاٹ فال زیروجبکہ شدید سردی کی وجہ سے زیادہ گیس استعمال سے کئی مقامات پر کم پریشر کی شکایات موصول ہوئی ہیں۔ 

ترجمان پٹرولیم ڈویژن

مزید : صفحہ اول


loading...