جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کیس،لارجر بنچ سے تین ججز کو الگ کرنے کی درخواست سماعت کیلئے مقرر

جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کیس،لارجر بنچ سے تین ججز کو الگ کرنے کی درخواست سماعت ...

  



اسلام آباد(آن لائن) چیف جسٹس سپریم کورٹ جسٹس گلزار احمد نے جسٹس فائز عیسیٰ کیخلاف ریفرنس کے معاملے پر لارجر بنچ سے تین ججز کو الگ کرنے کی درخواست سماعت کیلئے مقرر کردی، چیف جسٹس 31 دسمبر کو ان چیمبر سماعت کریں گے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق جسٹس عمرعطاء بندیال، جسٹس منصور علی شاہ اورجسٹس منظور ملک کو بنچ سے الگ کرنے کی درخواست کی گئی تھی۔ دوسری جانب سپریم کورٹ نے جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کے خلاف سپریم جوڈیشل کونسل میں زیرسماعت صدارتی ریفرنس کیخلاف دائر د رخواست کی سماعت جنوری کے دوسرے ہفتے تک ملتوی کردی۔جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں 10رکنی فل کورٹ بنچ نے کیس کی سماعت کی، اس موقع پر خیبر پختونخوا بار اور پشاور ہائیکورٹ بار کے وکیل افتخار گیلانی نے دلائل دیتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ اس ریفرنس کیساتھ پوری وکلا ء برادری جڑی ہوئی ہے،بنچ اور بار ایک گاڑی کے دو پہیے اور جج کی مدت ملازمت عدلیہ کی آزادی سے منسلک ہے اسلئے وکلا ء برادری اجتماعی طور پر استدعا کررہی ہے کہ عدلیہ کی آزادی کویقینی بنا ناہوگا۔فاضل وکیل نے بتایا کہ ریفرنس میں جج کیخلاف ایک صفحے کا ثبوت بھی فراہم نہیں کیا گیا اس لئے میرا کہناہے کہ کوئی شخص بھی عدالت کی عزت و وقار کیساتھ نہیں کھیل سکتا، سوال یہ ہے کہ 22 کروڑ عوام میں سے صرف 17 افراد سپریم کورٹ کے جج ہیں، کیابغیر کسی ثبوت کے ان کی عزت و وقار پر شک کیا جا سکتا ہے یہ امر واضح ہے اگر اس عدالت کی عزت نہ ہو تو معاشرے کی بھی عزت نہیں ہوگی، کیونکہ معاشرے کا وقار عدالت کے وقار کیساتھ وابستہ ہے، یہ کیس ہمیں احساس دلا رہا ہے، کہ اس مقدمے سے ججزپر عوام کے اعتماد کو ٹھیس پہنچی ہے۔

جسٹس قاضی فائز کیس

مزید : صفحہ اول