قدرتی ذخائر سے مالا مال علاقے کو حقوق نہیں دئیے جا رہے ہیں: میاں نثار گل 

قدرتی ذخائر سے مالا مال علاقے کو حقوق نہیں دئیے جا رہے ہیں: میاں نثار گل 

  



کوھاٹ (بیورو رپورٹ) جنوبی اضلاع کے ممبران اسمبلی نے ایک بار پھر تیل و گیس کمپنیوں کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ قدرتی ذخائر سے مالامال علاقے کے حقوق نہیں دئے جارہے اب مجبور ہوگئے کہ اگلے ماہ سے پرامن احتجاج شروع کیاجائے صوباء حکومت جنوبی اضلاع عوام کے ساتھ مسلسل زیادتی کررہی ہے اب تیل گیس کمپنیاں نہ سدھریں تو پانچ جنوری سے اپنے علاقوں سے تیل گیس سپلائی بند کرنے پر مجبور ہونگے اور ذمہ داری موجودہ حکومت پر عائد ہوگی ممبر صوبائی اسمبلی میجرشاہ داد کی میزبانی میں لاچی میں  گرینڈ جرگے سے اپنے خطاب میں ایم پی ایز میاں نثار گل۔میجر شاہ داد۔سابق ایم این اے پیرحیدرشاہ۔ ن لیگ کے رحمت سلام۔سابق mna شمس الرحمن۔  مولانا میر زقیم۔مولانا شاہ عبدالعزیز۔ مفتی جنان‘ شمس الرحمان خٹک اور دیگر مقررین نے کہا کہ ٹنل کے اس پار عوام کے ساتھ زیادتی ہورہی ہے بہت ہوچکا اب تیل گیس کمپنیوں سے حقوق لے کر رہیں گے انہوں نے خبردارکیا کہ مول کمپنی ہوش کے ناخن لے اور ہمارے مسائل ترجیہی بنیاد پر حل کرکے جنوبی عوام کے حقوق دے ورنہ  تو ذمہ داری کمپنیوں  پر ہوگی انہوں نے مزید کہا ہمارے وسائل پر پاکستان اباد ہے اور ہمارے عوام مسائل کا شکار ہوکر وسائل سے محروم ہیں بے روزگاری عام اور لوگ پریشان ہیں لہٰذا یک بار پھر حکومت اور تیل گیس کمپنیوں سے کہتے ہیں کہ ارام سے اپنے جائز حقوق دیکر احتجاج پر مجبور نہ کیا جائے نہیں تو نئے سال کے پہلے ہفتے سیپرامن احتجاج کی کال دیکر پانچ جنوری کو تیل و گیس کی سپلائی بند کردیں گے ٹریفک کی روانی ہوگی لیکن تیل و گیس کے ٹینکرز کو جانے کی اجازت نہیں ہوگی اور اسکی ذمہ دار کمپنیاں اور حکومت ہوگی جرگے میں متفقہ طور پر کوہاٹ کرک ہنگو سے 20 رکنی۔لویہ جرگہ۔ کا اعلان ہوا جسکے چیرمین ایم پی اے میاں نثار گل۔جنرل سیکرٹری مفتی جنان۔فنانس سیکرٹری میجر شاہ داد اور پریس سیکرٹری مولانا مرزاقیم ہونگے جبکہ کوہاٹ لاچی کرک ہنگو شکردرہ سے مختلف سیاسی سماجی شخصیات کمیٹی کے اراکین ہونگے احتجاج کو موثر بنانے کیلئے مختلف مقامات کے دورے کرکے لوگوں کو تیار کیا جائے گا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...