کرونا وائرس،سینماء و تھیٹروں میں شائقین کی تعداد میں کمی

کرونا وائرس،سینماء و تھیٹروں میں شائقین کی تعداد میں کمی

  



لاہور(فلم رپورٹر)پاکستان میں کرونا وائرس کی خبروں نے جہاں دیگر شعبوں کو متاثر کیا ہے وہیں پر سنیما گھروں اور تھیٹروں میں بھی شائقین کی تعداد میں کمی دیکھنے میں آئی ہے۔سنیما گھر تو ویسے ہی کافی عرصہ سے ویران ہیں کیونکہ غیر ملکی خاص طور پر بھارتی فلموں کی بندش کی وجہ سے عوام نے سنیما گھروں کا رخ کرنا چھوڑ دیا ہے۔

جبکہ کرونا وائرس کے حوالے سے آنے والی خبروں نے تو بلکل ہی رہی سہی کسر نکال دی ہے۔تھیٹر انڈسٹری کی سرکردہ شخصیت ڈاکٹر اجمل ملک کا کہنا ہے کہ اگرخبروں کا بازار اسی طرح گرم رہا تو تھیٹر بھی مکمل طور پر ویران ہونے کا خطرہ ہے۔ جاری ہونے والے ایک مسودے میں کہا گیا تھا کہ کسی بھی ہجوم والی جگہ پر شہری کوشش کریں کہ ایک دوسرے سے ہاتھ نہ ملائیں، جس شخص کو کھانسی ہو اس سے 2 میٹر کے فاصلے پر رہا جائے اور اس کے علاوہ دفاتر میں کمپیوٹر پر کام کرنے والے افراد دستانوں کا استعمال کریں کیونکہ یہ وائرس ہوا کے ذریعے ہی منتقل ہوتا ہے۔ ہدایت کی گئی ہے کہ لوگ ایک دوسرے سے گلے ملنے سے بھی اجتناب کریں کیو نکہ یہ ایک خطرناک وائرس ہے جو ایک شخص سے دوسرے میں منتقل ہوتا ہے۔اسی لئے جاری کردہ ہدایت نامے میں ایسی کسی بھی سرگرمی سے منع کیا گیا ہے جس سے یہ وائرس منتقل ہونے کا خطرہ ہو سکتا ہے۔ واضح رہے کہ چین کے شہر وہان سے شروع ہونے والا کرونا وائرس پاکستان پہنچ گیا ہے۔ہزاروں لوگوں کی ہلاکت کا سبب بننے والے وائرس نے اب پاکستان کا رخ کر لیا ہے جس کے بعد اب تک دو مریضوں میں اس کی تصدیق ہو گئی ہے، لیکن اب دونوں مریضوں کی طبیعت کے بارے میں مثبت خبریں آ رہی ہیں اور کہا جا رہا ہے کہ ان کی حالت تشویش نا ک نہیں ہے۔یاد رہے کہ لاہور بھر کے سرکاری اسپتالوں میں کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے تمام انتظامات مکمل کرلئے گئے ہیں۔لاہور میں کرونا وائرس سے متاثر کسی شخص کی خبر نہیں ملی ہے۔

مزید : کلچر