ضم شدہ اضلاع،خصوصی توجہ مرکوز ہے،کمشنر بنوں

ضم شدہ اضلاع،خصوصی توجہ مرکوز ہے،کمشنر بنوں

  



سرائے نورنگ(نمائندہ پاکستان)کمشنر بنوں ڈویژن عادل صدیق نے کہا ہے کہ حکومت ضم شدہ قبائلی علاقوں کی ترقی و خوشحالی پر خصوصی توجہ دے رہی ہے اور اس سلسلے میں جامع اور مربوط اقدامات لئے جارہے ہیں تاکہ یہاں کے عوام کو ملک کے دیگر علاقوں میں رہنے والے لوگوں کے برابر لایا جاسکے اور ان کی محرومیوں کا خاتمہ ہوسکے۔وہ یہاں لکی مروت کے ٹرائبل سب ڈویژن بیٹنی میں کھلی کچہری کے موقع پر قبائلی عمائدین سے خطاب کررہے تھے اس موقع پر پاک فوج کے بریگیڈئیر عامر،کرنل امجد، ڈپٹی کمشنر لکی مروت عبدالحسیب،اسسٹنٹ کمشنر ٹرائبل سب ڈویژن سجاد حسین اور دیگر سرکاری محکموں کے افسران بھی موجود تھے۔کھلی کچہری میں قبائلی عمائدین نے کمشنر بنوں کو علاقے کی پسماندگی اور اپنے مسائل بیان کرتے ہوئے کہا کہ علاقے کی سڑکیں شدید خستہ حالی کا شکار ہے جس کی وجہ سے آمدورفت میں عوام کو سخت پریشان کا سامنا کرنا پڑتا ہے اسی طرح علاقے میں صحت کی سہولتوں کو بھی شدید فقدان ہے اور تعلیمی ادارے نہ ہونے کے برابر ہے۔کمشنربنوں عادل صدیق نے انہیں یقین دلایا کہ ان کے تمام مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کے لیے تمام ممکنہ وسائل بروئے کار لائے جا رہے ہیں تاکہ یہاں کے عوام بھی ملک کے دیگر حصوں میں بسنے والے لوگوں کی طرح زندگی بسر کر سکیں اور انہیں زندگی کی تمام تر سہولیات گھر کی دہلیز پر میسر ہوں۔ بعد ازاں کمشنر نے ضم شدہ علاقے بیٹنی کے سرکاری محکموں کے افسران سے فرداً فرداً ملاقات کی اور افسران نے انہیں اپنے محکموں کی کارکردگی سے متعلق تفصیلی بریفنگ دی کمشنر بنوں نے انہیں ہدایت کی کہ وہ فوری طور پر اپنے دفاتر ضلع بنوں سے ٹرائبل سب ڈویژن لکی مروت کے ہیڈکوارٹر مستی خیل منتقل کردیں تاکہ یہاں کے عوام کے مسائل گھر کی دہلیز پر حل ہوسکیں۔ اس سے پہلے کمشنر بنوں عادل صدیق نے پاک فوج کے اعلی افسران کے ہمراہ ٹرائبل سب ڈیویژن لکی مروت کو شمالی وزیرستان اور جنوبی وزیرستان سے جدا کرنے والی سرحد کا دورہ کیا جہاں پاک فوج کے افسران نے انہیں علاقے کی جغرافیائی حدود سے متعلق تفصیلی بریفنگ دی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر