سینٹ میٹی بزرگ والدین کا خیال نہ رکھنے پر وارننگ پھر سزا اور جرمانے کا بل منظور

سینٹ میٹی بزرگ والدین کا خیال نہ رکھنے پر وارننگ پھر سزا اور جرمانے کا بل ...

  



اسلام آباد(آئی این پی)سینیٹ کی فنکشنل کمیٹی برائے انسانی حقو ق نے بزرگ والدین کا خیال نہ رکھنے والے بچوں کے لئے سزا اور جرمانہ مقرر کرنے سے متعلق بل متفقہ طور پر منظور کر لیا، بل کے تحت ایک کمیشن بنے گا۔ جو از خود نوٹس بھی لے سکے گا کہ کون سا ایسا بچہ ہے جو اپنے والدین کا خیال نہیں رکھ رہا، ماں باپ اس کمیشن کو خط بھی سکتے ہیں، ٹیلی فون اور رپورٹ بھی کر سکتے ہیں،پہلے بچوں کو سمجھانے کی کوشش کی جائے گی اگر وہ نہیں سمجھتے تو پھر کمیشن اس کا کیس بنائے گا، کیس فرسٹ کلاس مجسٹریٹ سنے گا۔اس کی اپیل سیشن کورٹ کے پاس ہو گی۔ 25ہزار روپے جرمانہ اور ایک مہینہ سزا ہو سکے گی۔اجلاس چیئرمین مصطفی نواز کھوکھر کی صدارت میں ہوا، جس میں تشدد اور زیر حراست ہلاکت کے تدارک اور کنٹرول کرنے کے بل پر غور کیا گیا، بل کی محرک سینیٹر شیری رحمان نے کہا کہ پانچ سالوں میں صرف پنجاب میں 1820ٹارچر کے کیس سامنے آئے ہیں، چیئرمین کمیٹی نے کہا کہ بل میں کچھ ڈرافٹنگ غلطیاں ہیں۔ کمیٹی نے بل پر تفصیلی غور کیا۔ اجلاس میں معذور افراد کے حقوق سے متعلق بل پر بھی غور کیا گیا۔ کمیٹی کو بتایا گیا کہ پی آئی اے اور دیگر ملکی ایئرلائینز میں سفر کرنے کے حوالے سے معذور افراد کو بہت مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے جبکہ بینکوں کی سروسز حاصل کرنے میں بھی معذور افراد کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے، کمیٹی نے معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے گورنر اسٹیٹ بینک اور پی آئی اے کے سربراہ کو طلب کرنے کے سمن جاری کر دیئے۔

سینیٹ کمیٹی اجلاس

مزید : پشاورصفحہ آخر