بینک آف پنجاب مالیاتی نتائج کی منظوری،منافع میں تاریخی اضافہ

  بینک آف پنجاب مالیاتی نتائج کی منظوری،منافع میں تاریخی اضافہ

  



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) دی بینک آف پنجا ب کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کا اجلاس منعقد ہو ا۔ اجلاس میں بورڈ کی جانب سے بینک کے سال 2019 کے آڈٹ شدہ مالیاتی نتائج کی منظوری دی گئی۔ بورڈ نے سال2019 کے دوران شاندار مالیاتی نتائج حاصل کرنے کیلئے انتظامیہ کی کاوشوں کو سراہا جن کی بدولت بینک نے اپنی تاریخ کا بلند ترین منافع حاصل کیا۔ یہ مالی نتائج گزشتہ چند سالوں کے دوران کیے گئے اقدامات اور حکمتِ عملی کا نتیجہ ہیں۔بورڈ نے حصص داران کے لیے سال2019 کے لیے 7.5% کیش ڈیوڈنڈ کاا علان بھی کیا۔اس طرح بینک کی فی حصص آمدنی3.12 روپے رہی۔31دسمبر 2019کو بینک کے ڈپازٹ691.02 ارب روپے کے سطح پر پہنچ گئے۔ گزشتہ سال 595.58ارب روپے تھے۔ بینک کے قرضہ جات اور سرمایہ کاری بالترتیب 428.85 ارب روپے اور361.45 ارب روپے رہے۔بینک کی ایکویٹی 46.68 ارب روپے رہی جوکہ گزشتہ سال37.72 ارب روپے تھی۔31دسمبر 2019 کو بینک کی کیپیٹل ایڈیکویسی ریشو14.80% رہی اور بینک اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی متعین کردہCAR کی مطلوبہ سطح سے مکمل مطابقت رکھتا ہے۔ پاکستان کریڈٹ ریٹنگ ایجنسی (پیکرا) کی جانب سے بینک کو بلند ترین قلیل المدتی رینک"A1+" دیا گیا جبکہ طویل المدتی ریٹنگ اینٹیٹی ریٹنگ"AA" دی گئی ہے۔

بینک آف پنجاب

مزید : صفحہ آخر