سندھ حکومت کیلئے خوشخبری کلیم امام واپس، مشتاق مہر نئے آئی جی تعینات

سندھ حکومت کیلئے خوشخبری کلیم امام واپس، مشتاق مہر نئے آئی جی تعینات

  



اسلام آباد،کراچی (آئی این پی)وفاقی حکومت نے مشتاق مہر کو آئی جی سندھ پولیس تعینات کرنے کی منظوری دے دی، وفاقی کابینہ نے سرکولیشن کے ذریعے سمری کی منظوری دی، 27جنوری کو وزیراعظم عمران خان اور وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ کی ملاقات میں آئی جی سندھ کی تبدیلی پر اتفاق کیا گیا تھا، اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کی جانب سے جلد باضابطہ نوٹیفکیشن جاری کیاجا ئیگا، توقع ہے مشتاق مہرنوٹیفکیشن جاری ہونے کے بعد فوری بطور آئی جی سندھ اپنی ذمہ داریاں سنبھال لیں گے۔ سندھ حکومت نے گریڈ 22کے ایک اور 21کے 4نئے ناموں کی سمری بھجوائی تھی جن میں گریڈ 22کے مشتاق مہر اورگریڈ 21کے غلام قادر تھیبو، کامران فضل، ثناء اللہ عباسی اور انعام غنی کے نام شامل تھے تاہم وفاقی کابینہ نے مشتاق مہر کے نام کی منظوری دیدی۔وفاقی حکومت نے آئی جی سندھ کا تبادلہ وفاقی کابینہ کی منظوری سے مشروط کیا تھا۔وزیراعظم کے دورہ کراچی کے دوران وزیراعظم اور وزیراعلی کے درمیان آئی جی کے لیے ایک نام پر اتفاق رائے کی خبر سامنے آئی تاہم بعد میں وفاقی کابینہ نے آئی جی سندھ کی تعیناتی کا معاملہ وزیراعلی اور گورنر کے سپرد کردیا تھا لیکن سندھ حکومت نے کابینہ کے فیصلے کو غیر آئینی قرار دیتے ہوئے گورنر سندھ سے مشاورت سے انکار کردیا تھا۔ مشتاق مہر اپنی نئی تعیناتی سے قبل ایڈیشنل آئی جی سندھ کے طور پر اپنی ذمہ داریاں سر انجام دے رہے ہیں۔واضح رہے کہ گزشتہ دنوں سندھ کابینہ نے آئی جی سندھ پولیس کلیم امام کو عہدے سے ہٹاکر ان کی خدمات وفاق کے سپرد کرنے کی منظوری دی تھی جس پر پی ٹی آئی سندھ کے رہنما فردوس شمیم نقوی نے عدالت جانے کا اعلان کیا تھا۔ وفاق اور سندھ کے درمیان آئی جی سندھ کی تعیناتی کا تنازع کافی پراناہے جو بیچ میں انتہائی شدت اختیار کرگیا تھا۔

آئی جی سندھ

مزید : صفحہ اول