پرائیوٹ سیکٹر‘ میڈیکل‘ڈینٹل کالجز میں از سر نو داخلے‘ بینک آف پنجاب کا آن لائن ویپ پورٹل اوپن

پرائیوٹ سیکٹر‘ میڈیکل‘ڈینٹل کالجز میں از سر نو داخلے‘ بینک آف پنجاب کا آن ...

  



ملتان ( کو رٹ رپورٹر ) پنجاب کے پرائیویٹ سیکٹر میڈیکل اور ڈینٹل کالجز میں داخلہ برائے ایم بی بی ایس /بی ڈی ایسسیشن20۔2019 (بقیہ نمبر51صفحہ12پر)

میں داخل طلبہ کو کالجز کے ازسرنو انتخاب کا موقع دیا گیا ہے۔اور اس کے لیے بنک آف پنجاب کا آن لائن ویب پورٹل گذشتہ روز(28فروری،جمعہ)سے کھول دیا گیا ہے۔ یہ پورٹل 2 مارچ 2020 کی شام 5 بجے بند کردیا جائے گا۔اور ڈیڈ لائن میں کوئی توسیع نہیں کی جائے گی۔یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز لاہور نے تمام ایسے امیدواران جو اس سیشن کے دوران پرائیویٹ سیکٹر کالجوں میں داخل ہوچکے ہیں۔ان کیلئے لازمی قرار دیا ہے کہ وہ تمام کالجوں کے نام بلحاظ ترجیح آن لائن پورٹل پر ازسر نو دیں۔بصورت دیگر وہ اپنے داخلوں سے محروم ہوسکتے ہیں۔جس کے ذمہ دار وہ خود ہوں گے اور بعدازاں اس حوالے سے کوئی درخواست یا اپیل قابل قبول نہیں ہوگی۔امیدواران کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ تمام پرائیویٹ سیکٹر کالجوں کے نام بلحاظ ترجیح بہت دھیان سے پورٹل پر دیں۔تاکہ ان کو ان کے میرٹ اور پسند کے مطابق کالج میں داخلہ مل سکے۔یاد رہے کہ امیدوار آن لائن پورٹل پر صرف تمام کالجوں کے نام بلحاظ ترجیح دے سکتے ہیں۔تاہم پہلے سے دیے گئے کوائف میں کوئی تبدیلی ممکن ہے نہ ہی کوئی نئی درخواست جمع کرائی جاسکے گی۔امیدواران کالجوں کی جو ترتیب منتخب کریں گے وہ حتمی ہو گی اور اس میں بعدازاں کوئی تبدیلی ممکن نہیں ہوگی یہ شرط لازمی نوعیت کی ہے۔اور اس میں کوئی رعایت نہیں دی جائے گی۔پہلے منتخب کالج سے شروع ہو کر امیدوار کو اس کے میرٹ کے مطابق منتخب کردہ کالجوں کے میرٹ پر یکے بعد دیگرے جانچا جائے گا۔یعنی ایک کمپیوٹرائزڈ سافٹ ویئر کے ذریعے اس کے میرٹ کو کالج کے میرٹ سے میچ کرکے داخلہ کا اہل قرار دیا جائے گا۔ایک مرتبہ کسی کالج میں جگہ ملنے کے بعد امیدوار کالجوں کے دی گئی ترتیب میں اس کالج سے نیچے موجود کالجوں میں سے کسی کالج میں داخلے کا تقاضہ نہیں کرسکتا۔ تاہم سیٹ خالی ہونے پر اسے منتخب کردہ کالجوں میں سے کسی کالج میں اپ گریڈ کیا جاسکے گا۔اور یہ اپ گریڈیشن امیدوار کیلئے لازم ہو گی۔امیدوار کو کسی بھی ایسے کالج میں داخلے کیلئے زیر غور نہیں لایا جائے گا جس کا نام اس نے اپنی فہرست انتخاب میں نہیں دیا ہوگا۔چاہے وہ اس کالج میں پہلے سے داخل ہو یا اس کے لیے میرٹ پر ہی کیوں نہ آتا ہو۔چنانچہ وہ امیدوار جو اس وقت کسی کالج میں داخل ہیں اور سمجھتے ہیں کہ اگر وہ کوئی چوائس نہیں دیں گے تو ان کا داخلہ برقرار رہے گا۔وہ غلطی پر ہیں۔ایسی صورت میں انہیں سلیکشن کے عمل سے باہر کردیا جائے گا۔یونیورسٹی خود سے کسی امیدوار کو اس کالج میں داخل نہیں کرے گی۔جس کا نام اس نے اپنی فہرست انتخاب میں نہیں دیا ہو گا۔امیدواران کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ تمام کالجوں کے نام بلحاظ ترجیح پورٹل پر دیں تاکہ میرٹ کے مطابق انہیں اپنی پسند کا کالج مل سکے۔اس سارے عمل کے نتیجے میں مختلف کالجوں سے اپ گریڈ یا ڈاؤن گریڈ ہونے والے امیدواران کے اکیڈمک کریڈٹس اور فیسیں بغیر کسی کٹوتی کے ان کے متعلقہ کالجوں میں ٹرانسفر کی جائیں گی۔

اوپن

مزید : ملتان صفحہ آخر