میٹرک امتحان‘ فزکس کے پیپر میں غلطیوں کا انکشاف‘ سٹوڈنٹس سراپا احتجاج

  میٹرک امتحان‘ فزکس کے پیپر میں غلطیوں کا انکشاف‘ سٹوڈنٹس سراپا احتجاج

  



ملتان (سٹاف رپورٹر) تعلیمی بورڈ ملتان کے حکام کی غفلت و نااہلی کے باعث میٹرک کے سالانہ امتحانات 2020کے سلسلے میں گزشتہ روز فزکس کے پیپر میں شدید غلطیاں‘طلبا وطالبات چکرا کر رہ گئے‘سوال نمبر 5میں اردو کی رقم میں ایک زاویے کی قیمت 35 ًدی گئی جبکہ انگریزی میں زاویے کی قیمت 30 ً دی گئی۔‘ اسی طرح گروپ سیکنڈ میں 4سوال معروضی (بقیہ نمبر33صفحہ12پر)

پرچہ میں دئیے گئے جو آپشن کے بغیر تھے‘ یہ تعلیمی بورڈ کے ذمہ داران کی شدید غفلت‘ لاپروائی اور نا اہلی کو ظاہر کرتے ہیں۔اس صورتحال نے طلبا وطالبات کو شدید الجھن سے دوچار کردیا۔ تعلیمی حلقوں کا کہنا ہے کہ چیئرپرسن ادھر ادھر کے معاملات کی بجائے تعلیمی بورڈ کے حقیقی مسائل پر توجہ دیں‘ یہ سنگین ترین غلطی اور حکام کے انتہائی غیر ذمہ دار ہونے کاثبوت ہے‘ غلط سوالیہ پیپر کیسے بن گیا اور پھر اسے چیک کس کس نے کیا اور اوکے کس نے کیا کہ وہ امتحانی سنٹرز میں پہنچ گیا‘ معصوم طلبا وطالبات کو ذہنی اذیت سے دوچار کرنے والے ذمہ دار افراد کے خلاف سخت ایکشن ہونا چاہئیے۔ دوسری جانب کنٹرولر امتحانات نے صورتحال کا علم ہونے پر اپنی غلطی مان لی اور سیکنڈ گروپ کے ایک کوڈ کے پیپرز کے طلبہ کو 4نمبرز دینے کا اعلان کردیا۔اس بارے میں تعلیمی بورڈ ملتان کے ترجمان کا کہنا ہے کہ چیئرپرسن ڈاکٹر شمیم اختر نے مذکورہ صورتحال کا سختی سے نوٹس لیاہے اور آج(29) فروری کو ہنگامی اجلاس طلب کرلیا ہے اور یقین دہانی کرائی ہے کہ کسی بھی بچے کی حق تلفی نہیں کی جائے گی۔

احتجاج

مزید : ملتان صفحہ آخر