ایران سے واپس آنیوالے افراد پر کڑی نظر‘ ہیلتھ ٹیموں کی دوڑیں

  ایران سے واپس آنیوالے افراد پر کڑی نظر‘ ہیلتھ ٹیموں کی دوڑیں

  



ملتان‘ روجھان‘ وہاڑی‘ بورے والا (کورٹ رپورٹر‘ نمائندہ پاکستان‘ بیورو رپورٹ‘ سٹی رپورٹر‘ تحصیل رپورٹر) پنجاب بھر کے ہسپتالوں،مراکز صحت پر تعنیات ڈاکٹروں و سٹاف،میڈیکل سٹوڈنٹس نے کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے خدشہ کے پیش نظر بائیو میٹرک حاضری عارضی طور پر معطل کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔اس سلسلے میں طبی حلقوں نے اعلی حکام کو اپنے مطالبہ سے تحریری طور پر بھی آگاہ کیا ہے۔ روجھان سے کی سال سے لنجوانی خاندان کے افراد محنت (بقیہ نمبر11صفحہ12پر)

مزدوری کرنے اور بھیگ مانگنے کی غرض سے خفیہ طور پر ایران آتے جاتے ہیں زرائع کے مطابق لنجوانی خاندان کے تیرا افراد ع،ن،س،ن،س سمیت نوخواتین جلیل،عباس،دوست حسین سمیت تیرا افراد چھ روز قبل ایران سے واپس آئے ہیں جن کی واپسی کا سن کر ڈاکٹر طارق جاوید کی نگرانی میں میڈیکل ٹیم موقع پر پہنچ گئی کیونکہ ایران میں کرونا وائرس پھیلا ہوا ہے تشویش ہے کہ ایران سے واپس آنے والے افراد میں کرونا وائرس موجود ہونے کا خدشے کے پیش نظر میڈیکل ٹیم نے ایران سے واپس آنے والے افراد کا چیک اپ کیا اور ڈیٹا جمع کیا زرائع کے مطابق ایران سے واپس آنے والے تیرا افراد میں نذلہ زکام کے علامات موجود ہیں جبکہ انکو بخار نہیں ہے کیونکہ روجھان میں کروناوائرس کی تشخیص کے لیے جدید سہولیات موجود نہیں ہیں اس لیے ایران سے واپس آنے والے افراد کی مذید تشخیص کے لیے مقامی میڈیکل ٹیم نے اعلی سطح پر ٹیمیں روجھان پہنچنے کی ہدایت کی ہے۔ ادھر تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال میں آنے والے کورونا وائرس کے دو مشتبہ مریضوں کو داخل کر لیا گیا ہے دونوں مشتبہ افراد کی شناخت محمد فرحان اور غلام حسین سکنہ 199 ای بی سے ہوئی ہے جو آپس میں کزن ہیں اور ایک ہی گھر میں رہتے ہیں محمد فرحان گیارہ روز قبل ایران سے پاکستان پہنچا تھا جو کہ پچھلے تین ماہ سے روز گار کے سلسلہ میں ایران میں مقیم تھا ایران سے واپسی سے ابتک نزلہ، زکام ٹھیک نہ ہونے پر آج اسپتال میڈیسن لینے پہنچا تھا جبکہ ایم ایس تحصیل اسپتال کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کے پیش نظر پنجاب گورنمنٹ کی ہدائیت پر پہلے سے ہی اسپتال میں آئسولیشن وارڈز بنا دیے گئے تھے جہاں پر ان دونوں مشتبہ مریضوں کو علاج معالجہ کی سہولیات فراہم کی جارہی ہیں اور ان کے بلڈ سیمپلز لیبارٹری کے لیے بھیجے جارہے ہیں۔

دوڑیں

مزید : ملتان صفحہ آخر