ایم کیو ایم رہنماؤں کی آڈیو لیکس کے بعد خالد مقبول صدیقی کا بیان

ایم کیو ایم رہنماؤں کی آڈیو لیکس کے بعد خالد مقبول صدیقی کا بیان
ایم کیو ایم رہنماؤں کی آڈیو لیکس کے بعد خالد مقبول صدیقی کا بیان

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)متحدہ قومی موومنٹ پاکستان کے کنوینئر خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ سندھ میں پیپلز پارٹی اور ہماری ایک تاریخ ہے، تلخیاں اور وعدہ خلافیاں ہیں۔

نجی نیوز چینل کے پروگرام میں گفتگو کے دوران انکا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی کا مؤقف ہوسکتا ہے کہ ان کے اور ن لیگ کے نمبرز پورے ہیں۔ خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ مجھے نہیں لگتا کہ مسلم لیگ( ن) کا بھی یہی خیال ہوگا۔ ابھی یہ فیصلہ( ن) لیگ اور ہم نے بھی کرنا ہے کہ ہمیں ضرورت ہے یا نہیں۔ ابھی مسلم لیگ( ن) سے مذاکرات چل رہے ہیں۔ 

خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ ہم نہ زبردستی حکومت میں جانا چاہتے ہیں اور نہ ان کی طرف سے انکار ہے۔  راستہ تعاون کا نکلناچاہیے، کابینہ سے نکل کر راستہ نہیں جانا چاہیے۔ ابھی یہ فیصلہ (ن) لیگ کو بھی کرنا ہے اور ہمیں بھی کرنا ہے کہ ہمیں ضرورت ہے یا نہیں۔ خالد مقبول صدیقی نے کہا کہ ہم نے ابھی گورنر اور وزارتوں کی بات ہی نہیں کی ہے۔ ہم نے تعاون کے لئے کوئی مشروط بات نہیں کی۔ ہوسکتا ہے پیپلز پارٹی چاہتی ہو ایم کیو ایم کا گورنر نہیں ہونا چاہیے۔ ہماری طرف سے تعاون کیلئے گورنر اور وزارتوں کا مطالبہ مشروط نہیں۔

مزید :

قومی -