دسمبر 2020 کے بعد ماہانہ بنیادوں پر سب سے زیادہ اضافہ، بٹ کوائن کی قیمت 2 سال بعد 60 ہزار ڈالر سے تجاوز کرگئی

دسمبر 2020 کے بعد ماہانہ بنیادوں پر سب سے زیادہ اضافہ، بٹ کوائن کی قیمت 2 سال ...
دسمبر 2020 کے بعد ماہانہ بنیادوں پر سب سے زیادہ اضافہ، بٹ کوائن کی قیمت 2 سال بعد 60 ہزار ڈالر سے تجاوز کرگئی
سورس: Pexels.com (creative commons license)

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور (ویب ڈیسک) کرپٹو کرنسی بٹ کوائن کی قیمت 2 سال بعد پہلی بار 60 ہزار ڈالر سے تجاوز کرگئی، جس کی قدر فروری کے دوران 42 فیصد بڑھی، یہ دسمبر 2020 کے بعد ماہانہ بنیادوں پر سب سے زیادہ اضافہ ہے۔

ڈان نیوز  نے   ’رائٹرز‘ کی رپورٹ کے  حوالے سے بتایا کہ  نومبر 2021 کے بعد پہلی بار بٹ کوائن 60 ہزار 131 ڈالر پر پہنچ گیا، جب اس کی قیمت 70 ہزار ڈالر سے تھوڑی کم ریکارڈ کی گئی تھی۔فیڈرل ریزرو کی جانب سے اس سال شرح سود میں کمی کرنے کے امکانات نے سرمایہ کار زیادہ نفع یا زیادہ غیر مستحکم اثاثوں کی جانب دیکھ رہے ہیں۔

ریٹیل انویسٹمنٹ پلیٹ فارم ’ای ٹورو‘ کے اسٹریٹجسٹ بین لیڈلر نے بتایا کہ بٹ کوائن میں نئے اسپاٹ بٹ کوائن ایکسچینج ٹریڈڈ فنڈز (ای ٹی ایفز) سے مسلسل آمد اور جون میں امریکا میں شرح سود میں کمی کے سبب اضافہ دیکھا جا رہا ہے۔

کوئی کام کیے بغیر صرف اپنا اضافی انٹر نیٹ بیچ کر ڈالر کمانے کا موقع
 کرپٹو پلیٹ فارم ’کوائن گیکو‘ نے بتایا کہ گردش میں موجود تمام بٹ کوائن کی قیمت 2 سالوں میں پہلی بار رواں مہینے 2 ٹریلین ڈالر سے تجاوز کر گئی۔دوسری جانب، دنیا کی دوسری بڑی کرپٹو کرنسی ایتھر 3.2 فیصد اضافے کے بعد 3 ہزار 353 ڈالر پر پہنچ گئی، جس نے دن کے آغاز میں ایک اور 2 سال کی بلند ترین سطح کو چھو لیا۔

مزید :

بزنس -