جمہوریت آگے بڑ ھ رہی ہے انتخابات جولائی میں ہوں گے ، کراچی پاکستان کا دل، یہ ترقی کریگا تو پورا ملک خوشحال ہو گا : وزیر اعظم

جمہوریت آگے بڑ ھ رہی ہے انتخابات جولائی میں ہوں گے ، کراچی پاکستان کا دل، یہ ...

  

کراچی (سٹاف رپورٹر ،نیوز ایجنسیاں) وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ جمہوریت الحمد اللہ آگے بڑھ رہی ہے۔ جولائی میں انتخابات ہوں گے۔ پاکستان کے عوام فیصلہ کرینگے اور جس کا بھی چناؤ ہو گا وہ جولائی کے آخر میں حکومت بنائے گا۔ اگر ہم توجہ اور لگن سے کام کرتے رہیں گے۔ جمہوریت کا تسلسل قائم رہے گا تو پاکستان ترقی کرے گا۔ کراچی پاکستان کے لئے دل کی حیثیت رکھتا ہے جہاں سے ہماری ساری کامرس آتی ہے، یہ ہمارا کمرشل سینٹر ہے، اگر کراچی ترقی نہیں کرے گا تو پاکستان بھی ترقی نہیں کرے گا، کراچی سب کا شہر ہے سب نے مل کر کام کرنا ہے اور کراچی کے مسائل کو حل کرنا ہے، یہ اللہ کا کرم ہے کہ (ن) لیگ کی حکومت وہ حکومت ہے جو منصوبے شروع بھی کرتی ہے اور مکمل بھی کرتی ہے۔ ان خیالات کا اظہار وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کراچی میں لیاری ایکسپریس وے کے نارتھ باؤنڈ کیرج وے کا افتتاح کرنے کے بعد تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر گورنر سندھ محمد زبیر عمر، وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ، وفاقی وزیر برائے مواصلات حافظ عبدالکریم، وزیر مملکت برائے اطلاعات و نشریات مریم اورنگزیب، وزیر مملکت برائے پیٹرولیم و قدرتی، وسائل میر جام کمال، مشیر خزانہ ڈاکٹر مفتاح اسماعیل، کور کمانڈر کراچی لیفٹیننٹ جنرل شاہد بیگ مرزا، ڈی جی رینجرز سندھ میجر جنرل محمد سعید، وزیراعظم ہاؤس کے ترجمان ڈاکٹر مصدق ملک، ڈائریکٹر جنرل فیڈرل ورکس آرگنائزیشن لیفٹیننٹ جنرل محمد افضل اور دیگر اعلیٰ حکام بھی موجود تھے۔ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ اس منصوبہ کا افتتاح کرتے بڑی خوشی ہے۔ 15سال سے عرصہ ہو گیا یہ سن رہے تھے کہ لیاری ایکسپریس وے کا منصوبہ زیرتکمیل آج اس کو مکمل کیا گیا ہے۔ منصوبہ کو مکمل کرنے پر ڈی جی ایف ڈبلیو او اور چیئرمین این ایچ اے کا مشکور ہوں۔ یہ منصوبہ مختلف مشکلات کا شکار رہا تکنیکی مشکلات بھی تھیں۔ تجاوزات بھی تھیں، میں مراد علی شاہ اور محمد زبیر دونوں کا شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں جن کسی کوششوں سے یہ مراحل طے ہوئے۔ ان کا کہنا تھا کہ ساڑھے پانچ ارب روپے کا منصوبہ تقریباً 10 ارب روپے میں مکمل ہوا۔ ان کا کہنا تھا کہ جب بھی منصوبے میں تاخیر ہوتی ہے۔ اس کی قیمت ادا کرنا پڑتی ہے۔ یہ بدقسمتی ہے کہ جہاں پر قیمت بھی زیادہ لگی وہاں یہ کراچی کے عوام کو 10 سال انتظار بھی کرنا پڑا۔ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ یہ وہ سبق ہیں جو ہمیں مستقبل کے منصوبوں میں میسر ہوں گے۔ ایم نائن کا موٹروے بھی مکمل ہونے کے آخری مراحل میں ہے اور یہ اللہ کا کرم ہے کہ (ن) لیگ کی حکومت وہ حکومت ہے جو منصوبے شروع بھی کرتی ہے اور مکمل بھی کرتی ہے ورنہ روایات رہی ہیں کہ منصوبہ ایک حکومت شروع کرتی ہے اور تیسری حکومت اے مکمل کرتی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ این ایچ اے چیئرمین کی محنت اور کوشش ہے کہ آج ملک کے اندر 1700 کلومیٹر کے چھ لین موٹروے بن رہے ہیں یا بن چکے ہیں۔ اس منصوبہ کو بھی کامیابی ملے گی اور دیگر تمام منصوبے بھی مقررہ وقت پر اپنے بجٹ کے مطابق مکمل ہونگے۔ ان کا کہنا تھا کہ وفاقی حکومت نے گورنر سندھ کو کراچی کے لئے 25 ارب روپے کا پیکج دیا ہے جس پر کام شروع ہونے لگا ہے۔ یہ سندھ حکومت کی مدد ہی ہے۔ عوام کے مسائل ہیں اور سندھ حکومت بھی کام کر رہی ہے کراچی کی مقامی حکومت بھی کام کر رہی ہے اور وفاقی حکومت بھی اس میں اپنا حصہ ڈال رہی ہے۔ کراچی سب کا شہر ہے سب نے مل کر کام کرنا ہے اور کراچی کے مسائل کو حل کرنا ہے۔ یہ ابتداء ہے ابھی ہم نے کراچی میں ہسپتال بنانے ہیں۔ سڑکیں بنانی ہیں اور شہر کے اندر ٹریفک کے نظام کو بہتر کرنا ہے یہ تمام چیزیں مل کر کراچی کے مسائل حل کریں گی۔ کراچی پاکستان کے لئے دل کی حیثیت رکھتا ہے جہاں سے ہماری ساری کامرس آئی ہے۔ یہ ہمارا کمرشل سینٹر ہے۔ اگر کراچی ترقی نہیں کرے گا تو پاکستان بھی ترقی نہیں کر سکے گا۔ ہم کراچی کی ترقی کے لئے پرعزم ہیں۔ خصوصی طور پر میں نے مفتاح اسماعیل کو ٹاسک دیا ہے کہ وہ کراچی کی ترقی کے لئے جو بھی کام کر سکیں کریں تاکہ کراچی کے مسائل میں کمی واقع ہو۔ شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ سی پیک منصوبہ کے تحت سڑکیں بن رہی ہیں۔ توانائی کے منصوبے لگ رہے ہیں۔ بندرگاہیں بن رہی ہیں۔ ایئرپورٹ بن رہے ہیں۔ ریلوے کے نظام کو اپ گریڈ کیا جا رہا ہے اور اقتصادی زون بن رہے ہیں جس سے ہماری معیشت مضبوط ہو گی۔ ملازمتیں پیدا ہوں گی۔ لوگ ٹیکس دیں گے اور اسی طرح معیشت پروان چڑھتی ہے۔ مربوط طریقہ سے کام ہو رہا ہے۔ جمہوریت الحمد للہ آگے بڑھ رہی ہے۔ جولائی میں انتخابات ہونگے۔ پاکستان کے عوام فیصلہ کرینگے اور جس کا بھی چناؤ ہو گا۔ وہ جولائی کے آخر میں حکومت بنائے گا اور یہ سلسلہ چلتا رہے گا۔ ہماری سب سے بڑی کوشش یہ ہے کہ حکومت کی پالیسیاں اور منصوبے سیاسی تبدیلی سے بالاتر ہوں۔ سیاسی حکومتیں آتی رہیں گی۔ انتخابات ہوتے رہیں گے لیکن منصوبے چلتے رہیں اور ملک ترقی کرتا رہے کرپشن سے پاک ہو شفافیت ہو یہی وہ نظام ہے جس کے اندر پاکستان ترقی کرے گا۔ اس میں کوئی شارٹ کٹ نہیں ہے۔ کوئی معجزات نہیں ہیں اگر ہم لگن اور توجہ سے کام کرتے رہیں گے۔ جمہوریت کا تسلسل قائم رہے گا تو پاکستان ترقی کرے گا۔ یہی وہ سبق ہے جو قائداعظم محمد علی جناح نے بھی دیا تھا اور یہی سبق پوری دنیا نے اپنایا ہے اور ترقی کی ہے۔ وزیراعظم کا کہنا تھا کہ مغربی راہداری اور دیگر سڑکوں کے منصوبے پورے پاکستان کو ترقی دینگے اور خوشحالی لائیں گے۔ موٹروے کے منصوبے پاکستان کی حالت تبدیل کر دینگے۔ ان کا کہنا تھا کہ آج وسطی ایشیائی ریاستیں بھی دیکھ رہی ہیں کہ ہمیں بھی ان پورٹس سے فائدہ ہو گا۔ مغربی چین بھی دیکھ رہا ہے اور افغانستان بھی دیکھ رہا ہے یہ صرف ہم تک محدود نہیں ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ پورے خطہ میں چین کا بیلٹ اینڈ روڈ منصوبہ جس کا اہم حصہ سی پیک ہے۔ یہ روابط استوار کرنے کے منصوبے ہیں جو پورے ملک اور خطہ میں خوشحالی دینگے۔

وزیر اعظم

کراچی (این این آئی) وزیراعظم شاہدخاقان عباسی کی زیرصدارت گورنرہاؤس میں امن وامان سے متعلق اجلاس ہوا جس میں گورنرسندھ محمد زبیر، وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ وفاقی وزیرداخلہ احسن اقبال وزیرمملکت برائے اطلاعات ونشریات مریم اورنگزیب ، وزیراعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹرمصدق ملک ، وزیرداخلہ سندھ سہیل انورسیال، کورکمانڈرکراچی لیفٹینٹ جنرل شاہد بیگ مرزا ، ڈی جی رینجر میجرجنرل محمد سعید اورقانون نافذ کرنے والے اداروں کے افسران نے شرکت کی ۔ اجلاس میں امن وامان کی صورتحال کراچی آپریشن، گرفتاردہشت گردوں کے خلاف مقدمات کی پیروی ،اپیکس کمیٹی کے فیصلوں پرعملدرآمد اورموجودہ تازہ ترین صورتحال کا تفصیلی جائزہ لیا گیا ۔ وزیراعظم کوکراچی میں قانون شکن عناصرکے خلاف جاری آپریشن اسٹریٹ کرائم کے خاتمے حالیہ ماورائے عدالت ہلاکتوں کے واقعات اورامن وامان کیدیگرامورپرتفصیلی بریفنگ دی گئی ۔وزیراعظم نے ماورائے عدالت ہلاکتوں کے واقعات اوراسٹریٹ کرائم پرتشویش کا اظہارکیا اورکہاکہ ماورائے عدالت ہلاکتیں قابل مذمت ہیں ایسے واقعات نہیں ہونے چاہیئیں متعلقہ ادارے ایسے واقعات کے تدارک کے لیے اپنا کردارادا کریں، وزیراعظم نے واقعات میں ملوث ذمہ داروں کوانصاف کے کٹہرے میں لانے کی بھی ہدایت کی ۔ وزیراعظم نے کہاکہ حالیہ واقعات میں ملوث عناصرکے خلاف سخت ترین کارروائی عمل میں لاکرقانون کی بالادستی یقینی بنائی جائے اورماورائے عدالت قتل کے واقعات کی جامع اورموثرتحقیقات کرائی جائے، جرائم پیشہ عناصر کا تعلق کسی بھی گروپ سے ہو ان کو بلاتفریق گرفتارکیا جائے انہوں نے کہاکہ شہریوں کوتحفظ فراہم کرنا حکومت کی ذمہ داری ہے ، قانون نافذ کرنے والے اداروں کی قربانیوں سے کراچی میں امن قائم ہوا ہے امن وامان کا قیام حکومت کی اولین ترجیح ہے امن وامان کے بغیرمعاشی ترقی ممکن نہیں ہے امن کے قیام کے لیے وفاقی حکومت سندھ حکومت سے تعاون جاری رکھے گی ۔ وزیراعظم نے واضح کیا کہ کراچی آپریشن سے شہرمیں امن قائم ہوا ہے آپریشن اہداف کے حصول تک جاری رکھا جائے گا انہوں نے قیام امن کے حوالے سے کراچی میں پولیس اوررینجرکی خدمات کوسراہا اورکہاکہ قومی سطح پراداروں کے درمیان قیام امن کے لیے اعدادوشماراورمعلومات کا تبادلہ ہونا چاہیئے۔ وزیراعظم نے شہرمیں اسٹریٹ کرائمز کے خاتمے کے لیے بھی کارروائی تیز کرنے کی ہدایت کی اورکہاکہ کراچی میں امن وامان کے قیام کے لیے وفاقی حکومت سندھ حکومت اورقانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ مکمل تعاون کرے گی وزیراعظم نے ہدایت کی کہ وفاقی اورصوبائی سیکورٹی پرمامورادارے مشترکہ معلومات کے تبادلے اورتعاون کے لیے رابطوں کو مزید فعال بنائیں ،اسٹریٹ کرائم اور جرائم پیشہ عناصرکے خلاف آپریشن کوتیز ترکیا جائے۔۔ انتہائی باخبرذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ وزیراعظم کوکراچی میں قانون شکن عناصرکے خلاف جاری آپریشن اسٹریٹ کرائم کے خاتمے اورامن وامان کے دیگرامورپرتفصیلی بریفنگ دی گئی ۔ وزیراعظم نے ہدایت کی ہے کہ حالیہ واقعات میں ملوث عناصرکے خلاف سخت ترین کارروائی عمل میں لاکرقانون کی بالادستی یقینی بنائی جائے، جرائم پیشہ عناصر کا تعلق کسی بھی گروپ سے ہو ان کو بلاتفریق گرفتارکیا جائے ۔ وزیراعظم نے واضح کیا کہ کراچی آپریشن سے شہرمیں امن قائم ہوا ہے آپریشن اہداف کے حصول تک جاری رکھا جائے گا۔ وزیراعظم نے شہرمیں اسٹریٹ کرائمز کے خاتمے کے لیے بھی کارروائی تیز کرنے کی ہدایت کی اورکہاکہ کراچی میں امن وامان کے قیام کے لیے وفاقی حکومت سندھ حکومت اورقانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ مکمل تعاون کرے گی وزیراعظم نے ہدایت کی کہ وفاقی اورصوبائی سیکورٹی پرمامورادارے مشترکہ معلومات کے تبادلے اورتعاون کے لیے رابطوں کو مزید فعال بنائیں ،اسٹریٹ کرائم اور جرائم پیشہ عناصرکے خلاف آپریشن کوتیز ترکیا جائے۔

اجلاس

مزید :

صفحہ اول -