ظالموں نے سرکا سایہ چھین لیا،مقتول گھر کا واحد کفیل تھا: بیوہ اکبر علی

ظالموں نے سرکا سایہ چھین لیا،مقتول گھر کا واحد کفیل تھا: بیوہ اکبر علی

  

لاہور (خبرنگار)جوڑا پیرہر بنس پورہ کے سرکاری سکول کے مالی مقتول اکبر علی کی بیوہ نے کہا ہے کہ ظالموں نے سر کا سایہ چھین لیا۔ تین کم سن بچوں کے ہمراہ کرائے کے مکان میں رہائش پذیر ہوں۔ سر چھپانے کے لیے چھت بھی نہ ہے۔ دو بچے سکول جارہے ہیں۔ مکان کا کرایہ اور بچوں کی تعلیم کا خرچہ کیسے پورا ہوسکے گا۔ بیوہ نے کہا کہ اُس کا خاوند سکول میں مالی تھا اور کم تنخواہ کے باوجود کرائے کے مکان میں تین کم سن بچوں کے ہمراہ گزارہ ہورہا تھا۔ ظالموں نے سر کا سایہ چھین لیا، جس سے ماہانہ آمدنی رُک گئی۔ سر چھپانے کے لیے چھت تک نہ ہے۔ خاوند واحد سہارا تھا جو ظالموں نے چھین لیا۔ بیوہ نے کہا کہ اب وہ مالک مکان کو کرایہ کہاں سے دے گی۔ بچوں کو تعلیم کیسے دلوائے گی ۔ مقتول اکبرعلی کی بیوہ نے کہا اُس کا بڑا بیٹا علی 8سالہ اور دوسری جماعت کا طالب ہے۔ چھوٹا بیٹا فرحان 5سالہ اور پریپ میں جارہا ہے۔ جبکہ بیٹی ڈیڑھ سالہ ہے۔ کون سہارا دے گا۔ کم سن بیٹی دن بھر پاپا پاپا کہتی رہتی ہے۔ بیٹی کی آواز سن کر دن بھر رو کر گزارتی ہوں۔ وزیراعلیٰ نوٹس لے کر اُسے بچوں کوپناہ دینے کے لیے گھر دیں۔ اور مقدمہ میں مداخلت کرکے اُسے انصاف دلائیں۔

مزید :

علاقائی -