بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں میں افسران کی پوسٹنگ و ٹرانسفر پر پابندی عائد

بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں میں افسران کی پوسٹنگ و ٹرانسفر پر پابندی عائد

  

ملتان (سٹاف رپورٹر)پاکستان الیکٹرک پاورکمپنی (پیپکو) نے میپکو سمیت ملک بھر کی تمام بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں میں افسران کی پوسٹنگ(بقیہ نمبر50صفحہ12پر )

و ٹرانسفر پر پابندی عائد کردی ہے ۔ سپریم کورٹ آف پاکستان کے احکامات کی روشنی میں افسران کے تقرر وتبادلوں پر پابندی عائد کی گئی ہے ۔ پیپکو اتھارٹی کی جانب سے تمام ڈسٹری بیوشن کمپنیوں کو احکامات جاری کئے گئے ہیں کہ وہ افسران کے تبادلے و تقرر کے معاملات میں ان کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کی منظور کردہ ٹرانسفر/پوسٹنگ پالیسی پر عملدرآمد کریں ۔منیجنگ ڈائریکٹر پیپکو نے سپریم کور ٹ آف پاکستان کے فیصلے کی روشنی میں احکامات جاری کئے ہیں کہ ڈسٹری بیوشن کمپنیاں اپنے بورڈ آف ڈائریکٹرز کی منظورکردہ ٹرانسفر /پوسٹنگ پالیسی پر سختی سے عملدرآمد کریں ۔ اگر کوئی کمپنی اس پالیسی سے ہٹ کر کر افسران کے تبادلے یا تقرر کرتی ہے تو نہ صرف یہ توہین عدالت کے زمرے میں آئیگا بلکہ واپڈا قوانین 1978 کی رو سے ’’مس کنڈکٹ‘‘ میں شمار ہوگا اور اس کمپنی کے چیف ایگزیکٹو آفیسر ، ہیومن ریسورس ڈائریکٹر اور دیگرمجاز افسران کے خلاف سخت تادیبی کارروائی عمل میں جائے گی ۔میپکو سمیت بجلی کی تقسیم کار کمپنیاں اس وقت افسران کے ٹرانسفر وپوسٹنگ کے حوالے سے غیر معمولی سیاسی دباؤ کا شکار ہیں ۔ سپریم کورٹ اور پیپکواتھارٹی کے اس فیصلے سے بجلی کمپنیاں کو اس صورت حال سے نکلنے میں مدد ملے گی اور حکومتی اہدا ف کاحصول بھی ممکن ہوجائیگا ۔ دریں ا ثناء ملتان الیکٹرک پاورکمپنی (میپکو) بورڈ آف ڈائریکٹرز نے بھی افسران کے تقرر وتبادلوں کی پالیسی کی منظوری دے دی ہے ۔ آئندہ میپکو ریجن کے زیر انتظام تمام شعبوں کے افسران کی ٹرانسفر ، پوسٹنگ اس پالیسی کے تحت کی جائے گی ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -