افغانوں کی مزید میزبانی ملکی سالمیت پر سوالیہ نشان بن گئی ،ساجدمیر

افغانوں کی مزید میزبانی ملکی سالمیت پر سوالیہ نشان بن گئی ،ساجدمیر

  

لاہور (این این آئی ) امیر مرکزی جمعیت اہل حدیث پروفیسر ساجد میر نے ڈرون حملوں کو پا کستان کے لیئے چیلنج قرار دیا ہے اورکہا کہ ایک بار پھر ڈرون حملے عالمی اداروں کے اصولوں کے منہ پر طمانچہ ہے،حکومت پارلیمان میں ڈرون گرانے کی قراردادوں پر عمل کرے، ڈرون حملے پاکستان کیلئے ناقابل برداشت ہیں۔ مرکزی دفتر راوی روڈ میں علماء کے وفود سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ ایک بار پھر ڈرون حملے کے ذریعے بین الاقوا می اصولوں اور ضابطوں کی دھجیاں اڑائی گئی ہے،ڈرون حملے ملک کی سلامتی پر حملے ہیں۔پاکستان نے بارہا امریکہ اور اسکے حلیفوں کو باور کرانے کی کوشش کی ہے کہ وہ مسئلے کا حصہ نہیں‘ بلکہ مسئلے کے حل کا حصہ ہے۔ لہٰذا امریکہ کی عسکری قیادت کو اب یہ بات سمجھ آجانی چاہیے کہ پاکستان کے تعاون کے بغیر نہ صرف یہ کہ افغانستان میں امن قائم نہیں ہو سکتا۔ پاکستان نے کم و بیش 35 سال مہاجرین کی میزبانی کی‘ اب مزید میزبانی پاکستان کی سالمیت پر سوالیہ نشان بن چکی ہے۔

ساجد میر

مزید :

پشاورصفحہ آخر -