خواتین کے مسائل حل کرنے کیلئے یوایم ٹی کے اقدامات قابل تحسین ہیں:ڈاکٹر سلمان شاہ

خواتین کے مسائل حل کرنے کیلئے یوایم ٹی کے اقدامات قابل تحسین ہیں:ڈاکٹر سلمان ...

  



 لاہور (سٹی رپورٹر) یو نیورسٹی آف مینجمنٹ اینڈ ٹیکنالوجی (یو ایم ٹی)کے شعبہ وومن انسٹیٹیوٹ آف لرننگ اینڈ لیڈر شپ (Will) کے تحت سماجی شمولیت پر پہلی دو روزہ بین الاقوامی کانفرنس، صدر یو ایم ٹی ابراہیم حسن مراد، چیئر مین شعبہ وومن انسٹیٹیوٹ آف لرننگ اینڈ لیڈر شپ (Will) مریم نور مراد،ڈاکٹر نشابہ حسن، ڈاکٹر نفیسہ شاہ ممبر صو بائی اسمبلی،مشیر وزیر اعلی پنجاب ڈاکٹر سلمان شاہ، محمد رضا ربانی سابقہ چیئر مین سینٹ، ماہر تعلیم ڈاکٹرعارفہ سیدہ زاہرہ،سینئر صحافی و تجزیہ کار نسم زاہرہ،سر دار آصف احمد علی سابق وزیر خارجہ، ریکٹر یو ایم ٹی ڈاکٹر محمد اسلم، ڈائریکٹر جنرل یو ایم ٹی عابد ایچ کے شیروانی سمیت40 نامور قومی و بین الاقوامی ریسرچ سکالرز،ماہر نفسیات اور مقررین نے شرکت کی۔اس موقع پر، سوشل ایکٹیوسٹس(الیکسینڈر جے ملک، سردار کلیان سنگھ کلیان، آریا اندریاس، لیفٹینٹ جنرل(ر) غلام مصطفے و دیگر)، کاروباری حضرات، طلباء فیکلٹی اور دیگر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے لوگوں کی بڑی تعداد نے بھی شرکت کی۔ کانفرنس کا موضوع سماجی شمولیت اور ڈایؤرسٹی تھا۔چیئر مین شعبہ وومن انسٹیٹیوٹ آف لرننگ اینڈ لیڈر شپ (Will) مریم نور مراد نے کانفرنس کی صدارت کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں رنگ و نسل کے فرق کے چنگل سے خود کو آزاد کرنا ہو گا تاکہ ہم سب مل کر ملک پاکستان کی سلامتی اور بقا کیلئے کام کر سکیں۔ انہوں نے مزید بتایا کہ انسٹیٹیوٹ آف لرننگ اینڈ لیڈر شپ (Will) خواتین کے مسائل کو بھی حل کر نے اور ان کے حقوق کے حوالے سے مثبت کردار ادا کریگا۔ مشیر وزیر اعلی پنجاب ڈاکٹر سلمان شاہ نے ایسی کارآمد کانفرنس کے انعقاد پر یو ایم ٹی انتظامیہ کو مبارکباد پیش کی۔ انہوں نے بتایا کہ ہمیں ڈایؤرسٹی کے اس ماحول میں تمام لوگوں کو ساتھ لے کر چلنا ہوگا۔انہوں نے نے مزید بتایا کہ حکومت یو ایم ٹی اور Will کی جانب سے لئے گئے اس قدم میں انکا بھر پور ساتھ دیگی۔ محمد رضا ربانی سابقہ چیئر مین سینٹ نے کہا کہ ہمارے ملک میں عدلیہ اور قانون سب کیلئے برابر ہونا چاہیے اور ہمیں ملک کا نظام ایک مثالی ماڈل کی طرح بنانا ہوگا۔انہوں نے یہ بھی کہا کہ سول سوسائٹی کے اداروں کو بھی اپنی ذمہ دایوں کو اکٹھے سے سمجھ کر پورا کرنا چاہیے۔انہوں نے اس بات پر بھی زور دیا کہ خواتین کو انکے حقوق اور تعلیم کی فراہمی وقت کی اہم ضرورت ہے۔ صدر یو ایم ٹی ابراہیم حسن مراد نے کہا کہ یو ایم ٹی کا ایسے ایونٹس کروانے کا مقصد پیشہ وارانہ طور پر معاشرے میں مثبت سوچ کے فروغ میں اہم کردار ادا کر نا ہے۔ انکا یہ بھی کہنا تھا کہ یہ کانفرنس ایک ایسا مفید پلیٹ فارم ہے جس کے ذریعے ماہرین اور پی ایچ ڈی سکالرز ایک جگہ پر اکٹھے ہو کر مضبوط باہمی تعاون سے سماجی شمولیت کے شعبہ میں مزید بہتر ی لا کر اس کو کار آمد بنا سکتے ہیں جس سے ہمارے معاشرے میں جہاں تمام مذاہب کے لوگ بستے ہیں میں مثبت تبدیلی رو نما کی جا سکتی ہے۔ ڈاکٹر نفیسہ شاہ ممبر صو بائی اسمبلی،سابق وزیر خارجہ سر دار آصف احمد علی اور سینئر صحافی و تجزیہ کار نسم زاہرہ نے اس بات پر روشنی ڈالی کہ ہم جس ڈایؤرس معاشرے میں رہتے ہیں وہاں سماجی شمولیت سے متعلقہ مسائل اور چیلنجز کا حل تلاش کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے۔انکا کہنا تھا کہ نسل، ذات اور فرقے کی بنیاد پر سماج میں پھیلے مسائل کو ہمیں سب کو ساتھ شامل کرکے ساتھ لے کر چلنے سے دور کرنا ہوگا۔ریکٹر یو ایم ٹی ڈاکٹر محمد اسلم اورڈائریکٹر جنرل یو ایم ٹی عابد ایچ کے شیروانی نے کانفرنس میں شرکت کرنے والے تمام مہمانوں کا آمد پر شکریہ ادا کیا۔

مزید : میٹروپولیٹن 1 /رائے