کوہاٹ،گیس کی لوڈشیڈنگ نے عوام کا جینا حرام کردیا

  کوہاٹ،گیس کی لوڈشیڈنگ نے عوام کا جینا حرام کردیا

  



کوھاٹ (بیورو رپورٹ) سردی کی شدت میں اضافے کے ساتھ ہی شہر کے مختلف علاقوں کی طرح شاہ آباد کالونی جرونڈہ میں بھی گیس کی لوڈشیڈنگ کا سلسلہ جاری ہے شہر کے بیشتر علاقوں کی طرح مذکورہ علاقے میں گیس کے جاتے ہی بجلی بھی چلی جاتی ہے جس کی وجہ لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے صبح سے لے کر رات گئے تک گیس کی سپلائی بند ہوتی ہے جس کی وجہ سے صارفین کو شدید ذہنی کوفت کاسامنا ہے پسماندہ علاقے میں لوڈشیڈنگ شروع ہوتے ہی ساتھ بجلی کی لوڈشیڈنگ شروع ہو جاتی ہے اور عوام کو سخت سردی میں مسائل کا سامنا ہے علاقے کے گیس و بجلی صارفین کا کہنا ہے کہ گیس کے اعلیٰ حکام سی این جی پمپ مالکان سے ملے ہوئے ہیں اور سی این جی سٹیشن کو صبح سے لے کر شام تک گیس کی سپلائی جاری رہتی ہے جبکہ مختلف علاقوں میں گیس وال بند کر کے تمام گھریلو صارفین کو گیس فراہمی بند کر دی جاتی ہے علاقہ عمائدین کا کہنا ہے کہ نومبر کے مہینے میں گیس بلوں میں نامعلوم قسم کا ٹیکس بھی شامل کیا گیا ہے صارفین کا کہنا ہے اول تو ہمارے علاقے میں دو انچ پائپ لائن بھی نہیں جسے صارف عدالت نے منظور کرائی ہے لیکن محکمہ گیس والوں نے صارف عدالت کی بھی دھجیاں اڑا دیں اور ابھی تک کوئی کام شروع نہیں کیا صارفین کا کہنا ہے کہ ایک طرف تو حکومت نے گیس کی قیمتوں میں اضافہ کیا ہے تو دوسری طرف گیس دستیاب بھی نہیں ہوتی انہوں نے مطالبہ کیا کہ گھریلو صارفین کو گیس کی فراہمی یقینی بنائی جائے بصورت دیگر سڑکوں پر نکل کر ریجن کے دفتر کو بھی تالے لگا دیں گے انہوں نے مزید رونا روتے ہوئے کہا کہ شدید سردی کے باعث ضلع کوھاٹ شہر کے علاقوں کی طرح گیس بند ہونے سے سلنڈر‘ لکڑی‘ کوئلہ کی مانگ میں اضافہ ہو گیا ہے دکانداروں نے گیس بندش کا فائدہ اٹھاتے ہی لکڑی اور کوئلہ کی قیمتوں میں بھی اضافہ کر دیا ہے جس کے باعث رہائشی ہوٹلوں سے کھانا وغیرہ منگوانے پر مجبور ہیں علاقے میں گیس بندش کا سلسلہ 8سے 10 گھنٹے تک رہتا ہے اکثر خواتین رات کو اٹھ کر کھانا پکانے پر مجبور ہیں انہوں نے کہا کہ محکمہ کی جانب سے گیس بندش کے حوالے سے یہ بہانا کیا جا رہا ہے کہ نئے پائپ ڈالے جائیں گے جلد گیس کی فراہمی شروع ہو جائے گی انہوں نے چیف جسٹس آف پاکستان‘ چیف جسٹس ہائی کورٹ سے بھی مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ پائپ لائن برائے دو انچ جلد از جلد ڈلوائی جائے اور گیس فراہمی کو یقینی نبایا جائے ورنہ بل بھی کسی صورت میں ہرگز دینے کو تیار نہیں ہیں علاقہ عمائدین میں حاجی اصغر‘ حاجی امیر افض‘ محمد اسرافیل‘ حاجی فیض اللہ‘ حاجی ساجد ظہیر‘ حاجی نور شاہ جہان‘ عبدالرحمن‘ محمد جان عاطف‘ اقبال بالا‘ احسن خان‘ اسد قریشی‘ شاہ زیب‘ عرفان‘ فخر زمان شامل ہیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر