وزیر اعظم اور وزیر اعلیٰ سندھ میں رابطہ،آئی جی پولیس کیلئے نئے نام مانگ لئے،مراد شاہ کا نکار

وزیر اعظم اور وزیر اعلیٰ سندھ میں رابطہ،آئی جی پولیس کیلئے نئے نام مانگ ...

  



کراچی، اسلام آباد (نیوزایجنسیاں)وزیراعظم عمران خان اور وزیراعلیٰ سندھ سیّد مراد علی شاہ کے درمیان ٹیلیفونک رابطہ ہوا ہے، وزیراعظم نے وزیراعلیٰ سندھ کو وفاقی کابینہ میں آئی جی سندھ کی تبدیلی سے متعلق بات چیت کے بارے میں بتاتے ہوئے نئے نام مانگ لئے۔وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ نے وزیراعظم کو اپنا موقف پیش کرتے ہوئے کہا ہے ہم جو نام دے چکے انہیں میں سے کسی کو آئی جی لگایا جائے، اب کوئی اور نام نہیں دیں گے۔دوسری طرف وزیراعظم عمران خان نے آئی جی سندھ کو کیلئے اسلام آباد طلب کرلیا۔ کلیم امام آج بروز بدھ دوپہر کے وقت عمران خان سے ملاقات کریں گے۔قبل ازیں آئی جی سندھ کلیم امام نے کہا ہے کہ میرے خلاف سازش ہوئی ہے، میں اتنی آسانی سے نہیں جاؤں گا اگر میں گیا بھی تو فکر نہ کریں ہاتھی سوا لاکھ کا ہی رہتا ہے۔ آئی جی سندھ کلیم امام نے سی پی او میں ہونے والی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے جتنا کام بھی کیا، یہ سب ٹیم ورک کا نتیجہ ہے، مجھ سے پہلے بھی بہت اچھے آئی جی رہے ہیں، ہمارے تمام افسران میں بہت قابلیت ہے، آج ہم نے دو چیزیں بنائی ہیں، ایک یادگار شہدا بنائی، دفتر میں آنے والوں کو پتا ہوگا کہ یہ وہ لوگ ہیں جن کی وجہ سے امن ہوا۔کلیم امام کا کہنا تھا یادگار شہدا کا افتتاح بھی شہدا کی فیملی سے کرایا گیا، یہاں جتنے پولیس افسران بیٹھے ہیں سب غازی ہیں، اپنی سروس میں ایسے دن بھی آئے جب کلمے پڑھ لئے تھے کہ آج آخری دن ہے۔ انہوں نے کہا کہ دوسرا کام ہم نے پولیس ہیڈ آفس کی تزین و آرائیش کی، ہم سب افسران ایک رول قانون کے تحت کام کرتے ہیں، قانون نافذ کرنے کی کوشش کرتے ہیں تو اس میں رکاوٹیں آتی ہیں لیکن اپنے شہدا کو یاد رکھتے ہوئے قانون کا عملدرآمد کرانا ہے۔بعد ازاں مرتضیٰ وہاب نے اپنے ردعمل میں کہاکہ آئی جی سندھ کا کام تقریر کرنا نہیں ہے، ہم کلیم امام کی پرفارمنس سے متاثر نہیں تھے، کسی سرکاری ملازم کو اس طرح کے بیانات دینا زیب نہیں دیتا۔پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما مرتضیٰ وہاب نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ کل وزیراعظم نے یقین دہانی کرائی کہ 24 گھنٹے میں آئی جی سندھ تبدیل ہوں گے، وفاقی حکومت کا استحقاق ہے کہ ان کو کہیں بھی تعینات کرے۔ صوبائی وزیر سعید غنی نے کہا ہے کہ کلیم امام اپنی باتوں سے ہمارے تحفظات درست ثابت کر رہے ہیں، کیا ہمیں آئی جی کی تبدیلی کے لیے اقوام متحدہ جانا پڑے گا؟۔ نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے سعید غنی نے کہا کہ سرکاری افسران کا تبادلہ ان کے کیریئر کا حصہ ہوتا ہے، صوبائی کابینہ آئی جی سندھ پر عدم اعتماد کا اظہار کر چکی ہے۔صو بائی وزیر کا مزید کہنا تھا کہ سازشی آئی جی نے ہمارے خلاف سازش کی۔ انہوں نے میرے اور امتیاز شیخ کے خلاف من گھڑت رپورٹ جاری کروائی۔ سابق صدر آصف علی زرداری اور وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کے درمیان ملاقات ہوئی ہے جس میں آئی جی سندھ سمیت دیگر معاملات پر بات چیت ہوئی۔ مراد علی شاہ آصف علی زرداری سے ملاقات کے لیے نجی ہسپتال پہنچے جہاں انہوں نے وزیراعظم سے ہونے والی ملاقات اور ٹیلی فونک بات چیت کے متعلق آصف علی زرداری سے تبادلہ خیال کیا اور انہیں آئی جی سندھ کے معاملے پروفاقی حکومت کی رائے سے آگاہ کیا۔سابق صدر نے وزیراعلیٰ سندھ کو جاری ترقیاتی کام مزید تیز کرنے کی ہدایت کی۔

آئی جی سندھ

مزید : صفحہ اول