پشاور میں مہنگائی کا بازار گرم،فی کلو گوشت 2ہزار روپے میں فروخت ہونے لگا

پشاور میں مہنگائی کا بازار گرم،فی کلو گوشت 2ہزار روپے میں فروخت ہونے لگا

  



پشاور(سٹی رپورٹر) مضر صحت گوشت کی فروخت اور گران فروشی کے باعث نمک منڈی کے رونقیں بھی ختم ہو گئی ہے نمک منڈی کے تاجروں نے گوشت کی قیمتوں میں از خود 500 روپے فی کلو کا مزید اضافہ کردیا ہے شہر کی مشہور نمکین گوشت فوڈ سٹریٹ میں گاہکوں کو مہنگے داموں گوشت بیچنے کی شکایات سامنے آئیں ہے تاہم ضلعی انتظامیہ اور محکمہ خوراک کا چیک نہ ہونے کی وجہ سے دکاندار من پسند نرخ لے رہے ہیں فی کلو نمکین گوشت 2000 روپے تک فروخت ہو رہا ہے جس کی وجہ سے شہریوں کی جانب سے شدید ردعمل سامنے ا?یا ہے تاہم بازار کی رونقیں بھی ماند پڑ گئی ہے پچھلے ایک سال سے نمکمنڈی میں ایک کلو دنبے کے پختہ گوشت کے نرخ 1000 سے بڑھ کر 2000 تک جا پہنچے ہیں جبکہ دیگر لوازمات کے ساتھ گاہک سے 3000 روپے تک کی وصولی کی جارہی ہیں نمکمنڈی سے متصل فوڈ سٹریٹ میں بھی رونقیں ختم ہو گئی ہے مذکورہ فوڈ سٹریٹ کو قائم کرنے پر ضلعی حکومت نے کروڑوں روپے خرچ کئے تھیجبکہ زیادہ تر دکانوں پر مضر صحت گھی اور آئل کے استعمال اور بیمار جانوروں کے گوشت کی خرید وفروخت کے باعث نمک منڈی بازار کی رونقیں بھی ختم ہو گئی ہیں ہزاروں کی تعداد سے کھانے کے شوقین کی تعداد سینکڑوں تک رہ گئی ہیں اس حوالیشہریوں کی جانب سے متعلقہ اداروں سے فوری ایکشن لینے کی درخواست کی گئی ہے

مزید : صفحہ اول