معاون خصوصی برائے اقلیتی امور وزیر زادہ کا سنٹرل جیل پشاور کا دورہ

معاون خصوصی برائے اقلیتی امور وزیر زادہ کا سنٹرل جیل پشاور کا دورہ

  

پشاور(سٹاف رپورٹر)وزیراعلی خیبر پختونخواکے معاون خصوصی برائے اقلیتی امور وزیر زادہ نے جمعرات کے روز سنٹرل جیل پشاور کا تفصیلی دورہ کیا اور جیل میں قید باالخصوص اقلیتی برادری کے قیدیوں سے ملاقات کی، اس موقع پر ایم پی اے روی کمار و، ایم پی اے گریب سنگھ، ہندو سکھ صبا مردان کے صدر اشوک کپور دیگر بھی معاون خصوصی کے ہمراہ تھے۔ وزیر زادہ نے  اقلیتی برادری سے چھوٹے چھوٹے کیسز میں قید، قیدیوں کو درپیش مسائل کے حل کے حوالے سے جیل سپرنٹنڈنٹ خالد خان سے تفصیلی بات چیت کی۔ اس موقع پر معاون خصوصی نے پشاور جیل میں اقلیتی کمیونٹی کے قید ی شکیل مسیح سمیت دوسرے قیدیوں سے فرداً فرداً ملاقات کی اور ان کو درپیش مسائل موقع پر سنے اور ان کے حل طلب مسائل کے حل کے لئے موقع پر احکامات بھی جاری کئیں۔ دورے کے دوران معاون خصوصی وزیر زادہ نے جیل حکام سے قیدی شکیل مسیح کے بارے میں بھی معلومات حاصل کی۔ جس پر جیل حکام نے معاون خصوصی کو بتایا کہ شکیل مسیح کی 213مرتبہ عدالت میں پیشی ہوئی ہے۔معاون خصوصی نے اس دوران تین نائجیرین قیدیوں سے بھی ملاقات کی اور ان کو جیل میں درپیش مسائل کے حل کے لئے متعلقہ حکام کو ممکن اقدامات اٹھانے کی ہدایت کی ہے۔ انہوں نے اقلیتی کمیونٹی کے ان قیدیوں جن کی کوئی لیگل ایڈ کی طاقت نہیں ہے، کو فری لیگل ایڈ دلانے کی یقین دہانی کرائی ہے، تاکہ ان قیدیوں کی مالی معاونت ہوسکے اور عدالت میں اپنا کیسز لڑ سکے۔ وزیر زادہ نے ان کو یہ بھی یقین دلایا ہے کہ چھوٹے چھوٹے کیسز کے حوالے سے وہ متعلقہ حکام سے بھی ملاقات کریں گے تاکہ ان کے ٹرائلز جلد از جلد شروع کئے جاسکے اور ان کو سالوں سال انتظار نہ کرنا پڑے۔ انہوں نے جیل حکام کو ہدایت دیتے ہوئے کہا ہے کہ جیل میں قید اقلیتی برادری کے قیدیوں کے ساتھ ممکن قانون کے مطابق تعاون برقرار رکھا جائے، کیونکہ ہم انسان سے نہیں بلکہ اس کے جرم سے نفرت کرتے ہیں۔ ان قیدیوں کو ان کا جو قانونی حق ہے اس سے ان کو کوئی محروم نہیں رکھ سکتا۔ تحریک انصاف کی حکومت قانون کی بالادستی اور انصاف پر یقین رکھتی ہے، ہم وزیراعلی خیبرپختونخوا محمود خان کی قیادت میں میرٹ، انصاف اور قانون کی بالادستی قائم کر کے رہینگے۔انہوں نے آخر میں جیل سپرنٹینڈنٹ  خالد خان کا  سنٹرل جیل  میں قیدیوں کو فراہم کردہ انسانی حقوق اور جیل کے بہترین نظام پر جیل انتظامیہ کو سراہتے ہوئے ان کو شکریہ بھی ادا کیا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -