مرید کے، بٹ گروپ کی قصاب گروپ کے گھروں پر فائرنگ، 5افراد ہلاک 

  مرید کے، بٹ گروپ کی قصاب گروپ کے گھروں پر فائرنگ، 5افراد ہلاک 

  

 کالاشاہ کاکو(نمائندہ پاکستان) مریدکے شہر کی آبادی قلعہ مسیتا حدوکے میں دیرینہ دشمنی پر مبینہ بٹ گروپ کے مسلح افراد کی قصاب گروپ کے گھروں پر اندھا دھند فائیرنگ سے  قصاب گروپ کا سربراہ بابا ریاست اسکا بیٹا عبدالرحمٰن عبدالروف بھتیجے عامر اور معراجدین موقع پر جانبحق ہوگئے جبکہ دو افراد شدید زخمی ہوگئے۔حملہ آور موقع سے فرار ہوگئے۔ جانبحق اور زخمی ٹی ایچ کیو اسپتال مریدکے منتقل کردئے گئے تفصیلات کے مطابق مریدکے کی آبادی قلعہ مسیتا حدوکی میں تقریبا سولہ سترہ سال قبل بٹ گروپ اور قصائی گروپ میں دشنی کا شروع ھونیوالے واقعہ میں بٹ گروپ کے چند افراد اپنے گھروں میں مٹی ڈال رھے تھے کہ اس دوران مبینہ طور پر آج قتل ھونیوالے قصائی برادری کے سربراہ بابا ریاست اور بیٹے کا ادھر سے گذر ھوا تو محمود نامی بٹ بابا ریاست کو مٹی اٹھا کر ان کے گھروں میں پھینکنے کا حکم دیا تو بابا ریاست کے بیٹے نے محمود سے کہا کہ میرا باپ بوڑھا ھے لہذا میں پھینک دیتا ھوں تو بٹ گروپ کے دو چار افراد نے غصے میں آ کر دونوں باپ بیٹے پر  تشدد کرتے ہوئے برلب نہر سر عام ننگا گھوماتے رہے جس کے نتیجے میں بعد ازاں قصاب گروپ نے موقع پا کر بٹ گروپ کے افراد وین میں سوار گھروں کو جا رہے تھے کہ قصابوں نے فائرنگ کر کے ان کے پانچ افراد قتل کر کے اس دشمنی کا آغاز کر دیا اور خو گھر بار چھوڑ کر فرار ہو گئے۔اور پھر جب کبھی موقع ملتا قصائی حملہ کر کے دو چار افراد قتل کر دیتے۔اس دوارن سیاسی مداخلت پر دونوں کے مابین صلح کی کوششیں ہوئیں لیکن بٹ گروپ تین افراد جو اشتہاری تھے نے بابا ریاست  کے قریبی عزیز باغبانپورہ لاہور بھرے بازار میں قتل کر کے فرار ہو گئے۔یوں اس دشمنی میں اب تک تقریبا 40افراد دونوں گروپوں میں قتل ہو چکے ہیں۔ابھی پچھلے مہینے مئیر کے امیدوار چوہدری ارشد ورک نے پھر دونوں کے درمیان قرآن پاک پر حلف دیکر صلح کروا دی جس  میں مبینہ طور پر گذشتہ روز کچہری میں تحریری صلح نامہ میں بٹ گروپ کو معاف کیا لیکن اسکے باوجود ذرائع کا کہنا ہے کہ بابا ریاست بیٹوں اور دیگر دوسرے افراد کے ہمراہ  اپنے ڈیرہ قلعہ مسیتا حدوکے میں بیٹھا ہوا تھا کہ مبینہ طور پر مخالفین آ کر اندھا دھند فائرنگ کر کے قصائی گروپ کے سربراہ بابا ریاست اور بیٹا عبدالرؤف۔دو بھتجے اور ایک قریبی عزیز فائرنگ کر کے شدید زخمی کر دئیے جنہیں مریدکے تحصیل ہیڈ کوارٹر ہسپتال پہنچایا گیا مگر یہ پانچوں افراد جاں بحق ہو گئے جبکہ رمضان اور ایک نامعلوم کو زخمی حالت میں لاہور منتقل کر دیا گیا جہاں انکی حالت بھی تشویشناک بیان کی جاتی ہے۔واقعہ کی اطلاع پورے علاقے میں جنگل کی آگ کی طرح پھیل گئی اور خوف و حراس فضا چھا گئی۔ڈی ایس پی سمیت مقامی پولیس بھی موقع پر پہنچ گئی۔ دشمنی میں بٹ گروپ کے گھر بھی پولیس مسمار کرچکی ہے وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے واقعہ کی رپورٹ طلب کر لی ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -