کا شتکاروں کیلئے ریلیف پیکج، لائیو سٹاک شعبہ میں مزید بہتری لائیں گے: حسنین بہادر وریشک 

کا شتکاروں کیلئے ریلیف پیکج، لائیو سٹاک شعبہ میں مزید بہتری لائیں گے: حسنین ...

  

ملتا ن (سپیشل رپورٹر) ایوان تجارت و صنعت ملتان کے تعاون سے یو ایس ایڈ، پنجاب بورڈ آف سرمایہ کاری اینڈ ٹریڈ کے زیر اہتما م  جنوبی پنجاب میں تجارتی و سماجی سرمایہ کاری کے مواقع اور چلینجز کی نشاندہی کیلئے ورچوئل سرمایہ کاری کانفرنس اختتام پذیر ہوگئی۔ اختتامی تقریب میں بتایا گیا کہ پنجاب بورڈ آف سرمایہ کاری اینڈ ٹریڈ کے ملتان میں جنوبی پنجاب کے (بقیہ نمبر10صفحہ 6پر)

دفتر کیلئے افتتاحی تقریب 11 فروری کو بہاؤالدین زکریا یونیورسٹی میں منعقد کی جائے گی۔ کانفرنس کے اختتامی روز زراعت اور لائیو سٹاک سے متعلق تفصیلی سیشن ہوا۔ سیشن میں وزیر لائیو سٹاک پنجاب سردار حسنین بہادر دریشک نے بطور مہمان خصوصی شرکت کی سیشن میں خطاب کرتے ہوئے وزیر لائیو سٹاک پنجاب سردار حسنین بہادر دریشک نے کہا کہ جنوبی پنجاب کے حوالے سے سرمایہ کاری کانفرنس کا انعقاد ایک سنگ میل کی حیثیت رکھتا ہے آنے والے وقت میں نئے صوبے کی حیثیت سے جنوبی پنجاب میں حکومت اور پرائیویٹ سیکٹر کا جوائنٹ وینچر کلیدی اہمیت کا حامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت موجودہ صورتحال میں زرعی اور لائیو سٹاک کے شعبے سے وابستہ کاشتکار مسائل کے حل کیلئے اقدامات اٹھا رہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ حکومت کے پاس فی الوقت صوبہ اور وفاق کی سطح پر لائیو سٹاک کے لئے کوئی واضح پالیسی نہیں ہے۔ ہم یو ایس ایڈ کے تعاون سے لائیو سٹاک کیلئے مشترکہ حکمت عملی پر کام کر رہے ہیں۔ آئندہ بجٹ میں لائیو سٹاک کی جامع پالیسی جاری کی جائے گی۔ صوبائی وزیر نے مزید کہا کہ لائیو سٹاک پالیسی لاکر پاکستان حلال میٹ کا بڑا ایکسپورٹر بن سکتا ہے۔ انہوں نے سرمایہ کاری کانفرنس کے انعقاد پر منتظمین کا شکریہ ادا کیا۔ وزیراعلیٰ پنجاب کے معاون خصوصی اور پنجاب بورڈ آف انوسٹمنٹ اینڈ ٹریڈ کے چیئرمین سردار الیاس تنویر خان نے کہا کہ کانفرنس میں دی گئی تجاویز کی روشنی میں جلد از جلد عملی اقدامات اٹھائے جاتے ہیں ورلڈ بینک کی ایز آف ڈؤنگ نزنس کی رینکنگ میں پاکستان کی 28 درجہ بہتری حکومتی کاوشوں اور کاروباری طبقہ کے اشتراک سے ممکن ہوئی۔ انہوں نے مزید کہا کہ سی پیک کا پہلا فیزکامیابی کے ساتھ مکمل ہوا ہے۔ سی پیک کے دوسرے مرحلے میں صنعت و زراعت کے شعبے میں ترقی اور کاروباری حلقوں کے ساتھ اشتراک کا عمل جاری ہے۔ سی پیک کی تین راہداریاں جنوبی پنجاب کو گوادر کی بندر گاہ سے جوڑتی ہیں۔ ہمارے لئے یہ اہم ہے کہ ہم اپنے چینی بھائیوں سے سیکھیں اور انکے تجربے کو اپنی صنعتی اور زرعی ترقی کیلئے استعمال کریں۔ ترقی کی اصل کنجی نجی شعبہ کے ہاتھ میں ہے۔ وزیراعظم عمران خان اور وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کی قیادت میں حکومت جنوبی پنجاب کی ترقی کیلئے سنجیدہ اور یکسو ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ بین الاقوامی شراکت دار نہ صرف جنوبی پنجاب میں سرمایہ کاری کے فروغ میں حصہ دار بن سکتے ہیں بلکہ پاکستان میں تیار کردہ اشیاء کی بین الاقوامی منڈیوں تک آسان رسائی میں کردار ادا کر سکتے ہیں۔ صنعت کے ذریعے معیشت کو پروان چڑھانے کیلئے ضروری ہے کہ ہم را میٹریل کے بجائے تیار اشیاء ایکسپورٹ کریں۔ حکومت میڈ ان پاکستان کا برانڈ دنیا بھر میں لے جانے کیلئے تمام تر سہولیات فراہم کرنے کیلئے پرعزم ہے۔ جنوبی پنجاب کے زرعی، انسانی و معدنی وسائل سے ہم آہنگ صنعت کو فروغ دینے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے جوبی پنجاب سرمایہ کاری کانفرنس کے انعقاد پر منتظمین،کونسل جنرل یو ایس لاہور، ملتان ایوان تجارت و صنعت کا خصوصی شکریہ ادا کیاسرمایہ کاری کانفرنس کی اختتامی نشست سے خطاب کرتے ہوئے جنوبی پنجاب کے معروف صنعتکار، ڈائریکر سرمایہ کاری بورڈ پنجاب اور شمع بناسپتی اینڈ کوکنگ آئل بنانے والے ادارے حفیظ گھی ملز کے سی ای او شیخ احسن رشید نے کہا کہ ورچوئل سرمایہ کاری کانفرنس جنوبی پنجاب کی ترقی میں کلیدی کردار ادا کرے گی۔ جنوبی پنجا کو توجہ دینے پر یو ایس ایڈ اور حکومت کا شکرگزار ہوں۔ سرمایہ کاری کانفرنس جنوبی پنجاب کی ترقی میں اہم کردار ادا کرے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ وزیراعظم عمران خان اقتدار سنھبالنے کے بعد ایک مرتبہ بھی ملتان نہیں آئے۔ یو ایس ایڈ کا پلیٹ فارم استعمال کرتے ہوئے انہوں نے وزیراعظم عمران خان، اور پنجاب بورڈ آف انوسٹمنٹ اینڈ ٹریڈ کے چیئرمین سردار الیاس تنویر کو ملتان دورہ کی دعوت بھی دی۔ شیخ احسن رشید نے کہا کہ اگر حکومت پالیسی سازی میں پرائیویٹ سیکٹر کو شامل کرکے چلے تو اس کے دور رس نتائج حاصل کئے جا سکتے ہیں۔ ہمیں ایکیڈیمیا اور انڈسٹری میں ایک بہتر تعلق استوار کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر کانفرنس کی تجاویز پر عمل کیا جائے اور ان شعبوں میں سرمایہ کاری کی جائے تو جنوبی پنجاب کی تقدیر بدلی جا سکتی ہے۔ قبل ازیں شیخ احسن رشید نے زراعت اور لائیو سٹاک کے حوالے سے تفصیلی پریذنٹیشن بھی دی  انہوں نے کہا کہ جنوبی پنجاب زراعت کے حوالے سے بہت زرخیر خطہ ہے۔ پاکستان کی زراعت میں حکومت اور کاشتکار ہی دو مرکزی سٹیک ہولڈرز ہیں۔ ہمارے پاس کورپریٹ زراعت کا کوئی سسٹم نہیں جس کی وجہ سے ملکی زرعی پیدوار میں تشویشناک حد تک کمی دیکھی جا رہی ہے۔ انہوں نے کپاس، گندم، چاول، گنا اور دیگر فصلوں کی پیداوار تقابلی جائزہ بھی پیش کیا۔ انہوں نے مطالبہ کیا ہے کہ حکومت زرعی شعبے کو کنسٹرکشن انڈسٹری کی طرح پیکج دے۔ شیخ احسن رشید نے مزید کہا کہ پاکستان کا 60 فیصد سے زائد لائیو سٹاک جنوبی پنجاب میں موجود ہے۔ لائیو سٹاک کے شعبہ میں سرمایہ کاری کے حوالے سے جنوبی پنجاب میں بہت پوٹینشل ہے۔ جنوبی پنجاب میں لائیو سٹاک کے شعبہ میں سرمایہ کاری کرکے پاکستان حلال میٹ اور دوسری ڈیری پراڈکٹس کا ایکسپورٹر بن سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پرائیویٹ سیکٹر کے پاس جنوبی پنجاب میں لائیوسٹاک، زراعت، کولڈ سٹوریج، ریسرچ اینڈ ڈیویلمنٹ اور دیگر شعبوں میں سرمایہ کاری کے سنہری مواقع موجود ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ جنوبی پنجاب میں صنعتی انقلاب کیلئے مزید انڈسٹریل اسٹیٹس بنائی جائیں، اس عمل سے بجلی کی زائد پیداوار کی کھپت ممکن ہوگی ایوان تجارت وصنعت ملتان کے صدر خواجہ صلاح الدین نے کانفرنس کے انعقاد پر کانفرنس کے شرکاء، امریکی حکومت، یو ایس ایڈ اور شیخ احسن رشید کا شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے جنوبی پنجاب کی ترقی کے حوالے سے خصوصی توجہ دی۔ انہوں نے کہا کہ جنوبی پنجاب پاکستان کا اہم خطہ ہے صرف زرخیز ہی نہیں بلکہ قدرتی وسائل سے مالامال ہے۔ جنوبی پنجاب کی زرعی اجناس پوری دنیا میں ذائقہ اور معیار میں خاص اہمیت رکھتی ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ سرمایہ کاری کانفرنس جنوبی پنجاب کے لئے ترقی کے نئے باب رقم کرے گی۔ملتان چیمبر سے کامران مقصود نے فشریز کے جنوبی پنجاب میں پوٹینشل پر تفصیلی بریفنگ دی۔ اختتامی سیشن میں پی سی جی اے سے عاصم سعید نے سیڈ ڈیویلپمنٹ اور کراپ زوننگ پر عملدر آمد کے حوالے سے تجاویز پیش کیں۔ وی سی زرعی یونیورسٹی ڈاکٹر آصف علی نے شرکاء کو حکومتی مؤقف سے آگاہ کیا۔ ڈپٹی زراعت جنوبی پنجاب بارک اللہ خان نے زرعی شعبے میں سرمایہ کاری کے مواقع سے متعلق آگاہ کیا۔ یو ایس ایڈ اور یو ایس حکومت کے نمائندوں کی جانب سے سیشن میں تفصیلی مواقع اور سرمایہ کاری سے متعلق آگاہ کیا۔ سیشن کے اختتام پر ملتان چیمبر سے سدرہ اے شیخ نے شرکاء کا شکریہ ادا کیا۔

حسنین دریشک

مزید :

ملتان صفحہ آخر -