دوبارہ مردہ قرار دیکر زندہ ہونیوالی خاتون نشتر میں دم توڑ گئی 

دوبارہ مردہ قرار دیکر زندہ ہونیوالی خاتون نشتر میں دم توڑ گئی 

  

ملتان (وقائع نگار) نشتر ہسپتال میں زیر علاج  دو بار مردہ قرار دیکر زندہ ہونے والی خاتون تیسری بار پھر  دم توڑ گئی۔جسکا ڈاکٹروں نے تصدیق کے بعد  ڈیتھ سرٹیفیکیٹ بھی جاری کر دیا ہے۔جبکہ دوسری جانب خاتون کے ورثا نے لاش سڑک پر رکھ کر ملزمان کی گرفتاری کیلئے احتجاج کیا۔معلوم ہوا ہے نشتر ہسپتال میں گولی لگنے سے 35 سالہ راحیلہ بی بی کو سوموار کے روز  تشویش ناک حالت میں وارڈ نمبر چھ میں داخل کروایا گیا۔منگل کے روز  تقریبا صبح دن گیارہ بجے وارڈ کے ڈاکٹروں نے زیر علاج مذکورہ مریضہ کو مردہ قرار دیا۔کچھ دیر بعد ورثا کے(بقیہ نمبر31صفحہ 6پر)

 شک ہونے پر ای سی جی کرائی کی گئی۔جس میں دل کی دھڑکن چلنے کے آثار نظر آئے۔اس کے بعد ڈاکٹروں نے راحیلہ بی بی کو طبی سہولیات دینا شروع کردی۔مگر ٹھیک اسی دن دو بجے دن دوبارہ چیک کرنے پر ڈاکٹروں مریضہ کو دوسری بار مردہ قرار دے دیا۔جس کا ڈاکٹروں نے ڈیتھ سرٹیفکیٹ بھی جاری کردیا۔جیسے ہی لاش کو سٹریچر پر ڈال کر سرد خانہ منتقل کرنے کیلئے کوشش کی۔تو اسی دوران مردہ خاتون راحیلہ نے اپنا ہاتھ کھڑا کرکے ژندہ ہونے کا اشارہ دیا۔خاتون کے زندہ ہونے پر ورثا نے شور مچا دیا۔دوبارہ دل کی دھڑکن چیک کی گئی۔دل چلانے پر خاتون کو دوبارہ  داخل کرکے علاج شروع کردیا گیا جبکہ۔ڈاکٹروں کے مطابق خاتون کا دماغ گولی لگنے سے ختم ہوگیا ہے۔اور وہ بے ہوشی کی حالت میں ہے۔گزشتہ صبح مذکورہ زیر علاج مریضہ تیسری بار دم توڑ گئی۔جسکو ڈاکٹروں نے مکمل تسلی کے بعد مردہ قرار دیا اور ڈیتھ سرٹیفیکیٹ جاری کردیا۔دوسری جانب ورثا نے مقتولہ کی لاش سڑک پر رکھ کر ملزمان کی گرفتاری کیلئے احتجاج کی۔

دم توڑ گئی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -