وزیراعظم ایک بار پھر اپوزیشن پر برس پڑے،بھگوڑا،ڈاکو ،چور اور قبضہ مافیا قرار دے دیا

وزیراعظم ایک بار پھر اپوزیشن پر برس پڑے،بھگوڑا،ڈاکو ،چور اور قبضہ مافیا ...
وزیراعظم ایک بار پھر اپوزیشن پر برس پڑے،بھگوڑا،ڈاکو ،چور اور قبضہ مافیا قرار دے دیا

  

ساہیوال (ڈیلی پاکستان آن لائن )ساہیوال میں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ ایک بھگوڑا لیڈر لندن میں بیٹھ کر انقلاب لانا چاہتا ہے،مولانا فضل الرحمان کرپٹ آدمی ہے،سارے ڈاکو اور چور اکھٹے ہوکر این آر او لینا چاہتے ہیں۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ فنانشنل ایکشن ٹاسک فورس(ایف اے ٹی ایف )پرہمیں سب سے زیادہ بلیک میل کیا گیا،اپوزیشن میری تعریف کرے تو اپنی توہین سمجھوں گا۔عوام کو بے وقوف سمجھنے والے خود بے وقوف ہوتے ہیں،بدعنوان عناصر جو مرضی کرلیں این آر او نہیں ملے گا،قبضہ مافیا تب تک نہیں چل سکتا جب تک اس کے پیچھے سیاست دان نہ کھڑے ہوں۔مریم نواز کو کھوکھر پیلس جانے سے پہلے تحقیق کرنی چاہیے تھی کہ کیا وہ زمین سرکاری تو نہیں؟یہ قبضے ن لیگ کے دور میں ہوئے اور ان قبضوں کو ن لیگ نے تحفظ فراہم  کیا،سوا ارب روپے کی زمین پر کھوکھر برادران نے قبضہ کیا تھا،یہ کہتے ہیں ہماری چوری چھوڑ دو ورنہ حکومت گرادیں گے۔ایک بھگوڑا لیڈر لندن میں بیٹھ کر انقلاب لانا چاہتا ہے۔

عمران خان کا کہناتھا کہ  سینیٹ الیکشن کے لیے ابھی سے لوگوں کی بولیاں لگنا شروع ہوچکی ہیں،یہ کس قسم کی جمہوریت ہے کہ ارکان ووٹ بیچیں گے۔سینٹ انتخابات اوپن بیلٹنگ سے  کروانے کے لئے آئینی ترمیم لارہے ہیں۔فارن فنڈنگ کیس میں یہ تحریک انصاف کو پھنساتے پھنساتے سارے خود پھنس گئے ہیں،ہم چاہتے ہیں کہ یہ کیس اپنی حتمی انجام کو پہنچے۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمان کرپٹ آدمی ہے اسے مولانا کہنا دین  کی توہین ہے۔فضل الرحمان کے پاس اربوں روپے کہاں سے آگئے؟فضل الرحمان مدارس  کے بچوں کو استعمال کرکے کروڑوں پتی بنے،اس وقت قانون کی بالادستی کی جنگ جاری ہے،یہ نیب سمیت کسی ادارے کو نہیں مانتے ،یہ صرف اسی کو مانتے ہیں جو ان کے حق میں فیصلہ دے۔

مزید :

قومی -