برازیل میں پھیلنے والی کورونا وائرس کی نئی قسم نے سائنسدانوں کو شدید پریشان کردیا، اس میں ایسی کیا خطرناک بات تھی؟ آپ بھی جانئے 

برازیل میں پھیلنے والی کورونا وائرس کی نئی قسم نے سائنسدانوں کو شدید پریشان ...
برازیل میں پھیلنے والی کورونا وائرس کی نئی قسم نے سائنسدانوں کو شدید پریشان کردیا، اس میں ایسی کیا خطرناک بات تھی؟ آپ بھی جانئے 

  

برازیلیا(مانیٹرنگ ڈیسک) برازیل میں سامنے آنے والی کورونا وائرس کی نئی قسم نے دنیا کو نئے خوف میں مبتلا کر دیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق برازیل کے شہر مناﺅس میں دریافت ہونے والی کورونا وائرس کی اس قسم کو ’پی ون‘ (P.1)کا نام دیا گیا ہے جس نے دنیا بھر کے سائنسدانوں کو بھی پریشان کرکے رکھ دیا ہے کیونکہ یہ نئی قسم گزشتہ قسم سے جسم میں پیدا ہونے والی اینٹی باڈیز کے خلاف بھی مزاحمت رکھتی ہے۔ اس پر نہ صرف یہ اینٹی باڈیز غیرموثر ثابت ہو رہی ہے بلکہ سائنسدان پریشان ہیں کہ اس نئی قسم پر کورونا وائرس کی ویکسین بھی کم موثر ہو گی۔

رپورٹ کے مطابق برازیل کے اس شہر میں کورونا وائرس کی پہلی لہر میں 75فیصد آبادی وائرس کا شکار ہو چکی ہے چنانچہ سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ اس لحاظ سے اس شہر کے لوگوں کو کورونا وائرس کی دوسری لہر سے محفوظ رہنا چاہیے کیونکہ ’ہرڈ امیونٹی‘ (آبادی کی واضح اکثریت کا وباءمیں مبتلا ہونا اور ان کے جسم میں اینٹی باڈیز کا بن جانا)کے اصول کے تحت اس شہر کے لوگوں میں کورونا وائرس کے خلاف امیونٹی ہونی چاہیے۔ تاہم وباءکی اس دوسری لہر میں بھی یہ شہر بری طرح متاثر ہو رہا ہے اور کثیر تعداد میں لوگ دوبارہ کورونا وائرس کا شکار ہو رہے ہیں۔واضح رہے کہ مناﺅس میں کورونا وائرس کی یہ نئی قسم گزشتہ سال دسمبر میں سامنے آئی تھی اورشہر میں تیزی سے پھیل رہی ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -