'جس ملک میں احتساب کا ادارہ ہی کرپٹ ہو اس کا کیا حال ہو گا؟' شاہد خاقان عباسی نے نیب کو کرپٹ قرار دے دیا

'جس ملک میں احتساب کا ادارہ ہی کرپٹ ہو اس کا کیا حال ہو گا؟' شاہد خاقان عباسی ...
'جس ملک میں احتساب کا ادارہ ہی کرپٹ ہو اس کا کیا حال ہو گا؟' شاہد خاقان عباسی نے نیب کو کرپٹ قرار دے دیا
سورس:   File

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن) مسلم لیگ ن کے رہنما سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے الزام عائد کیا ہے کہ قومی احتساب بیورو(نیب) ملک کا کرپٹ ترین ادارہ ہے ، جس ملک میں احتساب کا ادارہ ہی کرپٹ ہو وہاں کرپشن کا کیا عالم ہوگا۔ 

شاہد خاقان عباسی نے نجی  ٹی وی اے آر وائی نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ بدقسمتی سے پاکستان کی تاریخ میں ایسا پہلے کبھی نہیں ہوا کہ ایک ممبر قومی اسمبلی کے گھر کو گرا دیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان ڈیمو کریٹک موومنٹ( پی ڈی ایم) کی تمام جماعتوں کی اپنی اپنی رائے ہے لیکن فیصلہ جو بھی ہو گا وہ پی ڈی ایم کے پلیٹ فارم سے ہی ہوگا اگر کوئی  جماعت فیصلوں کا احترام نہیں کرے گی وہ اپنا نقصان خود کرے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ لانگ مارچ ہو گا اس میں کوئی شک نہیں ، استعفوں کا فیصلہ پی ڈی ایم کرے گی۔  تحریک عدم اعتماد پاکستان پیپلزپارٹی کی تجویز ہے ن لیگ اس کی حمایت نہیں کرتی ہے، اگر پاکستان پیپلزپارٹی تحریک عدم اعتماد کی دوبارہ تجویز لاتی ہے تو اس پر مشاورت ہوگی۔ 

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ پچھلے ڈھائی سال میں حکومت ایک بھی مثبت کام نہیں کرسکی ہے، وزیراعظم نے ایک بھی عوامی مسئلے پر بات نہیں سنی۔ عمران خان کے ذہن میں جو باتیں ہیں بس وہی دہراتے رہتے ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ عوام نے پی ڈی ایم کے پیغام کو قبول کیا ہے، پی ڈی ایم کا پیغام ہے کہ اب ملک میں آئین کی حکمرانی ہوگی۔ 

مزید :

علاقائی -اسلام آباد -