کیسا انوکھا چاند ہے جو صرف....!

کیسا انوکھا چاند ہے جو صرف....!
 کیسا انوکھا چاند ہے جو صرف....!

  


ہیلو پیارے پیارے دوستو سنائیں کیسے ہیں، امید ہے کہ اچھے ہی ہونگے، دوستوہم بھی اچھے ہی ہیں۔دوستو حیرت ہوئی رات گئے یہ خبر سن کر ہمارے ملک پاکستان میں ایک دفعہ پھر دو عیدیں منائی گئیں۔اور ہمارے بہت سے دوست کہہ رہے ہیں کہ کاش وہ دن بھی آئے جب ہمارے ملک میں بھی ایک ہی روز عید منانے کا اعلان کیا جائے اور سب مل کر ایک ہی روز نماز عید ادا کریں۔

جی ہاں رات کے ایک بجے کالم لکھنے کا ارادہ کیا، جی ہاں اس وقت تک خلیجی ممالک، یورپی ممالک، و دیگر بہت سے ممالک میں عید منانے کا اعلان کیا جا چکا تھا، جی ہاں کیونکہ بہت سے ممالک میں چاند نظر آنے کی اطلاعات موصول ہو چکی تھیں، جبکہ پاکستان بھر میں بھی کہیں عید کا چاند نظر آنے کی امید نہ تھی ........لیکن رات بارہ بج کر چالیس منٹ کے قریب پشاور میں مفتی شہاب الدین نے اس بات کا انکشاف کیا کہ اڑتالیس جگہوں سے چاند نظر آنے کی شہادت موصول ہو گئی ہے، اسی لئے پشاور سمیت صوبہ خیبر پختونخوا میں عید کا اعلان کر دیا گیا جبکہ باقی تین صوبوں میں بدستور روزہ رکھا گیا تھا، رات گئے صوبہ کے پی کے میں عید کا اعلان کر کے پختون برادری کے دلوں میں خوشیوں کے چراغ روشن کر کے ملک بھر میں دو عیدیں منانے کی ریت و روایت برقرار رکھی ........جی ہاں جب بچے تھے تب بھی اور اب جب جوانی کی دہلیز پار کر رہے ہیں ایسے عالم میں بھی ہم نے ہمیشہ ہی دو عیدیں دیکھیں........پشاور میں ایک دن پہلے عید منانے کا تنازعہ آج تک برقرار ہے، کتنی حکومتیں آئی گئیں، لیکن کسی نے بھی ........ ملک بھر کے باسیوں کو اکٹھے ایک روز عید منانے پر مجبور کیا نہ تیار کر سکے۔

 ہمارے بہت سے دوست اس بات پر حیران ہوتے ہیں کہ پختون برادری نے آج تک اپنا ریکارڈ برقرار رکھا ہے تمام پاکستانیوں سے ایک دن پہلے عید منانے کا، جی ہاں دیکھا گیا ہے کہ پختون برادری سعودی عرب کے ساتھ ہی پہلا روزہ بھی رکھتی ہے اور عید کا دن بھی اسی دن مناتی ہے جس دن سعودی عرب میں عید الفطر منائی جائے، تاہم شکریہ ہے کہ عید قربان ملک بھر میں ایک ہی دن ادا کی جاتی ہے۔“بہر حال بات ہو رہی تھی دو عیدیں منانے کی تو ہمارے بہت سے دوست ہمیں یہ بھی باور کروا رہے ہیں کہ تحریک انصاف کی حکومت نے بھی دعویٰ کیا تھا کہ وہ ملک بھر میں ایک ہی دن عید الفطر کا انعقاد کروائیں گے لیکن گویا وہ بھی ناکام ٹھہرے۔

 ہمیں تو اس بات پر اب کوئی حیرانی نہیں ہوتی کہ ملک بھر میں دو عیدیں منائی گئیں، لیکن ہمارے بہت سے دوستوں کو یہ ہی شکوہ ہے کہ یہ کیسا انوکھا چاند ہے جو ملک میں اور تو کہیں نظر نہیں آتا لیکن پشاور والوں کو ایک دن پہلے ہی نظر آ جاتا ہے اور بہت سے دوست کہتے ہیں کہ اگر پشاور والوں کو چاند نظر آیا تو باقی ملک میں بھی نظر آنا چاہئے۔

لیکن ہمارے بہت سے دوست تو تسلی دینے کو برملا یہ بھی کہہ دیتے ہیں کہ کاں چٹا ای اے۔“بہرحال بہت سے دوست سراپا حیرت اس بات پر بھی ہیں کہ آخر کیوں ہوتا ہے ایسا“ جب ہم سب ایک ہیں، ایک ہو کر اپنے پیارے وطن پاکستان میں رہتے ہیں ایک اللہ کی عبادت کرتے ہیں۔“ اپنے پیارے نبی ﷺ پر اور حضور پاک ﷺ کے آخری نبی ﷺ ہونے پر یقین کامل رکھتے ہیں تو تو ........ پھر ایک ہی دن ملک بھر میں عید کیوں نہیں منا سکتے، جی ہاں حیرت ہوتی ہے اس بات پر کہ ہمارا ملک ایک اور عیدیں ایک دن میں دو ........؟؟؟

رات گئے ٹی وی پر یہ خبر بھی گردش کرتی دیکھی کہ یورپ میں بھی عید کا چاند متنازعہ بن گیا، کہیں چاند نظر آیا تو کہیں دیکھنے والوں کو مایوسی ہوئی........بہرحال اب یورپ بارے ہم کیا کر سکتے ہیں، لیکن اپنے ملک بارے اور اس میں رہنے والے پاکستانیوں بارے بھی تو کچھ کر سکتے ہیں کچھ سوچ سکتے ہیں اور کچھ نہیں تو محض دعا ہی کر سکتے ہیں پورے یقین کے ساتھ کہ کاش وہ دن بھی آئے جب ملک بھر کے ہر شہر، گلی محلے، غرض ہر جگہ ایک ہی دن عید منائی جائے گی اور ہمیں کیا ہمارے دوستوں کو یقین ہے کہ وہ دن بھی جلد آئے گا، پتہ نہیں کب لیکن امید بھی ہے اور آس بھی ہے کہ ایسا بھی ہو گا اور ضرور وہ دن بھی آئے گا جب عید الفطر ملک بھر میں ایک ہی دن منائی جا سکے گی، بہرحال دوستو فی الحال اجازت دیں ہمیں ملتے ہیں آپ سے جلد ایک بریک کے بعد اللہ نگھبان رب راکھا۔ارے یاد آیا کہ آپ کو عید کی مبارکباد دینا تو بھول ہی گئے جی ہاں رمضان المبارک کو الوداع اور آپ سب کو دلی عید مبارک بھی کہتے ہیں۔

مزید : کالم