دنیا بھر کے مسلمان عید مناتے ر ہے ، فلسطینی اپنے پیاروں کی لاشیں اٹھانے میں مصروف رہے

دنیا بھر کے مسلمان عید مناتے ر ہے ، فلسطینی اپنے پیاروں کی لاشیں اٹھانے میں ...

 غزہ (خصوصی رپورٹ) تباہ حال فلسطین میں بھی اسرائیلی فضائی حملوں اور توپوں کی گن گرج کے سائے میں عید الفطر منائی گئی،دنیا بھر کے مسلمان عید مناتے ر ہے ، فلسطینی اپنے پیاروں کی لاشیں اٹھاتے رہے۔عید کے موقع پر اسرائیل نے جنگ بندی کے خاتمے کا اعلان کرتے ہوئے غزہ پر ایک مرتبہ پھر بمباری شروع کر دی اور تازہ فضائی کارروائی میں مزید 3 نہتے فلسطینی شہید ہو گئے۔ دوسری جانب امریکی صدر باراک اوبامہ نے اسرائیلی وزیراعظم کو فون کیا اور پائیدار جنگ بندی کا مطالبہ کیا۔ ذرائع ابلاغ کی رپورٹس کے مطابق اسرائیل اور حماس نے گزشتہ روز لڑائی روکنے پر اتفاق کیا تھا تاکہ محصورین غزہ تک طبی امداد اور بنیادی اشیا ضروریہ پہنچائی جا سکیں تاہم صیہونی فوج نے وقت سے قبل جنگ بندی توڑتے ہوئے ایک مرتبہ پھر غزہ کے علاقے خان یونس اور وسطی بارڈر پر شدید شیلنگ کی جس کے نتیجے میں 3 نہتے شہری شہید ہو گئے جبکہ جوابی کارروائی میں حماس کی جانب سے بھی راکٹ فائر کئے گئے۔ اس طرح غزہ میں لڑائی نے شدت اختیار کر لی ہے۔ ایسے میں جب حماس کے شدت پسندوں نے اسرائیل پر راکٹ برسائے اور اسرائیلی افواج نے محصور فلسطینیوں پر سخت حملے کئے۔ دوسری جانب امریکی صدر باراک اوباما نے اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو سے ٹیلی فون پر رابطہ کیا اور غزہ میں فوری طور پر جنگ بندی پر زور دیا۔ وائٹ ہاﺅس نے ایک بیان میں کہا ہے کہ صدر اوباما نے انسانی بنیادوں پر ایک غیر مشروط اور فوری فائر بندی پر زور دیا ہے جو اشد ضروری ہے تاکہ جارحانہ کارروائیوں کا خاتمہ ہو اور مصر کی ثالثی میں طے پانے والے نومبر 2012ءکے امن معاہدے کی بنیاد پر مستقل قیام امن ممکن ہو سکے۔ اس بیان میں مزید کہا گیا کہ امریکی صدر نے ایک مرتبہ پھر بڑھتی ہوئی فلسطینی ہلاکتوں اور اسرائیل کی جانب بھی جانوں کے ضیاع پر تشویش ظاہر کی ہے۔ انہوں نے اسرائیل کے اپنے دفاع کے حق پر بھی زور دیا ہے اور یہ بھی کہا ہے کہ دہشت گرد گروپوں کو غیر مسلح کرنے کی ضروت ہے۔ اس کے ساتھ ہی انہوں نے یہ بھی کہا ہے کہ غزہ کو عسکریت پسندی سے پاک کرنا بھی ضروری ہے۔ دریں اثناءپوپ فرانسس نے روم کے سینٹ پیٹرز سکوائر میں خطاب کے دوران، اسرائیل، غزہ، عراق اور یوکرائن میں جنگ و جدل کے خاتمے پر زور دیا۔عیدالفطر کے موقع پر اسرائیل کے راکٹ حملوں میں شفا ہسپتال اور اس کے قریب ایک پارک پر حملے میں بچوں سمیت دس فلسطینی شہید اور 46 زخمی ہو گئے ہیں۔ طبی عملے کے ایک اہلکار کے مطابق شفائ ہسپتال اور پارک پر اسرائیلی جہازوں کی جانب سے گرائے گئے راکٹوں سے دس فلسطینی شہید اور چھیالیس شدید زخمی ہو گئے ہیں۔فلسطین کے طبی عملے کے اہلکار ایمن شہابی اور غزہ پولیس کے آپریشن روم کا کہنا ہے کہ پارک اورہسپتال اسرائیلی فضائی حملے میں نشانہ بنے ہیں جبکہ اسرائیل کی فوج نے غزہ میں ہسپتال اور پارک کو نشانہ بنانے کی تردید کی ہے۔ اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ غزہ کے ہستپال شفا اور اس کے قریب واقعہ ایک پارک پر لگنے والے راکٹ حماس کی طرف سے داغے گئے تھے جو فنی خرابی کے باعث ان جگہوں پر پھٹ گئے۔

مزید : صفحہ اول