کلاشنکوف :دنیا کا سب سے خطرناک ہتھیار

کلاشنکوف :دنیا کا سب سے خطرناک ہتھیار
 کلاشنکوف :دنیا کا سب سے خطرناک ہتھیار

  


واشنگٹن(نیوز ڈیسک)اے کے47جیسے عرف عام میں کلا شنکوف بھی کہا جاتا ہے دنیا کے مقبول ترین اور مشہور ترین ہتھیار وں میں سے ایک ہے۔یہ بندوق دنیا کے ہر کونے میں اور قسم کے طبقات میں یکساں مقبول ہے۔ملک کی حفاظت کرنے والے سیکورٹی ادارے ہوں یا ملکوں میں بربادی پھیلانے والے دہشت گرد ہر کوئی کلاشکوف کا دلدارہ ہے۔اگرچہ دنیا میں ہر کوئی اس کے متعلق جانتا ہے لیکن اس کی کچھ ایسی خصوصیات اور باتیں بھی ہیں جن کے بارے میں بہت کم لوگوں کو علم ہے۔یہ بندوق ”میخائل کلاشنکوف“نامی روسی باشندے نے ایجاد کی جو اپنی زندگی کے ابتدائی سالوں میں روس کا دشمن تھا کیونکہ اسے سائبیر یا کی طرف دیس نکالا دے کر بھیج دیا گیا تھا۔بعد میں وہ روس لوٹ آیا اور دنیا کی مشہور ترین بندوق ایجاد کی لیکن اس کی اس شاندار ایجاد کے باوجود اسے کچھ نہ ملا کیونکہ روس میں کمیونسٹ نظام تھا اور لوگوں کی ایجادات کی مالک بھی حکومت ہی تھی لہذا کلا شنکوف بہت سے اعزازات ملنے کے باوجود کبھی دولت کا منہ نا دیکھ سکا۔ّ- ا س وقت دنیا میں 10کروڑ سے زائد کلا شنکوف بندوقیں پائی جاتی ہیں۔- اس میں حرکت کرنے والے حصے صرف آٹھ ہوتے ہیں اور اس کو بنایااور استعمال کرنا باقی بندوقوں کی نسبت آسان ہے، اس کا استعمال اتنا آسان ہے کہ بچوں کو بھی محض ایک گھنٹے میں اس کی تربیت دی جا سکتی ہے۔-مکمل لوڈ کی ہوئی کلاشنکوف کا وزن4 کلو گرام ہوتا ہے۔- القاعدہ کے سابق سربراہ اسامہ بن لادن کی تقریبا ہر تصویر اور ویڈیو میں کلاشنکوف ضرورہوتی تھی۔- ویت نام جنگ میں امریکیوں کی 1416رائفلیں گرمی اور نمی کی وجہ سے فیل ہو گئیں لیکن ویت نامی کلاشنکوف کا میاب رہی اسی طرح عراقی جنگ میں بھی امریکیوں کو اپنی بندوقیں چھوڑ کر کلاشنکوف کا سہارا لینا پڑا۔- کلاشنکوف کو دنیا کی کامیاب ترین بندوق کہا جاتا ہے اور اسلحہ کے ماہرین کا کہنا ہے کہ ماضی کی طرح یہ مستقبل میں بھی کامیاب ترین بندوق ہی رہے گی۔

مزید : صفحہ آخر