اسرائیلی وزیراعظم کی دھمکی، زمین، فضاءاور سمندر سے غزہ پر بمباری ، ایک ہی خاندان کے چھ افراد سمیت 60فلسطینی شہید

اسرائیلی وزیراعظم کی دھمکی، زمین، فضاءاور سمندر سے غزہ پر بمباری ، ایک ہی ...
اسرائیلی وزیراعظم کی دھمکی، زمین، فضاءاور سمندر سے غزہ پر بمباری ، ایک ہی خاندان کے چھ افراد سمیت 60فلسطینی شہید

  


غزہ سٹی (مانیٹرنگ ڈیسک) اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کی طرف سے طویل مدتی کارروائی کی دھمکی کے بعد غزہ پر زمین، سمندر اور فضا سے شدید قسم کی بمباری کی گئی ہے اور60حملوں میں ایک ہی خاندان کے چھ افراد سمیت کم ازکم 60فلسطینی شہید ہوگئے جبکہ درجنوں زخمی ہیں ،حماس کے ٹی وی چینل، ریڈیو اور دیگر عمارتوں کو نشانہ بنایا گیا۔

فلسطینی محکمہ صحت کے حکام کے مطابق ان حملوں میں کم از کم 60 فلسطینی مارے گئے ہیں ، آٹھ جولائی سے شروع ہونے والے اسرائیلی حملوں میں شہید ہونے والے فلسطینیوں کی تعداد 1,115 سے تجاوز کر گئی ہے،تازہ حملے میں شہید ہونیوالوں کی اکثریت عام شہری ہیں ۔

دوسری طرف اسرائیل نے حماس کو جانی نقصان کا ذمہ دارقراردیتے ہوئے دعویٰ کیاہے کہ ان کے 53 فوجی اور تین عام شہری مارے گئے ہیں جن میں ایک تھائی مزدور بھی شامل تھا۔

پیر اور منگل کی درمیانی شب لڑائی جاری رہی جس میں اسرائیل اور حماس دونوں نے ایک دوسرے پر حملے کیے۔ رات کو بیوریجی مہاجر کیمپ پر اسرائیلی حملوں میں اطلاعات کے مطابق 13 فلسطینی شہید ہوئے جن میں سے چھ کا تعلق ایک ہی گھرانہ سے تھا۔

غزہ حکام کے مطابق حماس کے رہنما اور سباق وزیر اعظم اسماعیل ہانیہ کے گھر پر اسرائیل نے بمباری کی تاہم حملے کے وقت ہانیہ کا گھر خالی تھا۔ حماس نے کہا ہے کہ ان کے الاقصیٰ ٹی وی چینل کو بھی ہدف بنایا گیا ہے۔

فلسطینی سکیورٹی ذرائع کے مطابق یکم شوال یعنی عید کی رات کو حملوں میں 55 مکان تباہ ہوئے جس کے ملبے تلے کئی لوگ دب گئے۔

دوسری جانب اقوامِ متحدہ کے سیکریٹری جنرل بان کی مون نے تشویش کا اظہار کیا ہے کہ اطلاعات کے مطابق اسرائیل طیاروں سے پمفلٹ گرا رہا ہے جس میں شمالی غزہ کے رہائشیوں کو گھر بار چھوڑنے کا کہا گیا ہے، اقوامِ متحدہ کے پاس اتنے وسائل نہیں کہ اتنی بڑی تعداد میں مہاجرین کی مدد کر سکے جبکہ اسرائیل کا کہنا ہے کہ اس نے یہ اقدام عام شہریوں کی حفاظت کی خاطر اٹھایا ہے۔

وزیراعظم نیتن یاہو کی دھمکی کے بارے جاننے کیلئے یہاں کلک کریں ۔

مزید : بین الاقوامی