سیکیورٹی اہلکاروں سے بدمزگی لیویز، خاصہ دار فورس کے 83 اہلکار برطرف

سیکیورٹی اہلکاروں سے بدمزگی لیویز، خاصہ دار فورس کے 83 اہلکار برطرف
 سیکیورٹی اہلکاروں سے بدمزگی لیویز، خاصہ دار فورس کے 83 اہلکار برطرف

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

پشاور (ویب ڈیسک) پاکستان کے قبائلی علاقے مہمند ایجنسی میں لیویز حکام کے مطابق لیویز اور خاصہ دار فورس کے 83اہلکاروں پولیٹیکل انتظامیہ نے برطرف کردیا ہے۔ پولیٹیکل ایجنٹ کے دفتر سے جاری حکم نامے کے مطابق ایجنسی کے مختلف علاقوں سے تعلق رکھنے والے 44 خاصہ دار اہلکاروں، 29 سپیشل خاصہ دار اہلکاروں جبکہ تین صوبیداروں سمیت 10 لیویز اہلکاروں کو اپنی ذمہ داریوں میں غفلت برتنے اور سیکیورٹی اہلکاروں سے بدمزگی کرنے پر برطرف کیا گیا ہے۔ مہمن ایجنسی کے پولیٹیکل ایجنٹ وقار علی نے بتایا برطرف ہونے والوں 44 خاصہ دار اہلکاروں کو ڈیوٹی سرانجام نہ دینے پر برطرف کیا گیا ہے جبکہ 29 سپیشل خاصہ داروں کو اس لئے برطرف کیا گیا کیونکہ وہ تنخواہ سرکار سے لیتے تھے مگر ڈیوٹی علاقے کے ملک کے ساتھ کرتے تھے اور 10 لیویزاہلکاروں کو یونیفارم میں سیکیورٹی اہلکاروں کے ساتھ جھگڑا کرنے پر برطرف کیا گیا ہے۔ وقار علی کا کہنا ہے برطرف اہلکاروں کو موقع دیا گیا ہے کہ وہ حکم پر نظر ثانیکے لئے درخواستیں دیں اور انہوں نے قابل قبول وضاحتیں پیش کیں تو انہیں بحال کیا جاسکتا ہے۔ مقامی صحافی نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کچھ عرصہ قبل مہمند رائفل اور انتظامیہ کے درمیان کسی بات پر جھگڑا ہوا تھا جس کے بعد انتظامیہ نے انہیں برطرف کردیا جبکہ برطرف ہونے والوں میں لیویز کے ایک صوبیدار سمیت پانچ اہلکار تاحال جیل میں ہیں۔

مزید : پشاور