رقاصاﺅں کا اغواء, تھانیدار سمیت 10 ہلکار جیل بھیج دئیے گئے

رقاصاﺅں کا اغواء, تھانیدار سمیت 10 ہلکار جیل بھیج دئیے گئے
رقاصاﺅں کا اغواء, تھانیدار سمیت 10 ہلکار جیل بھیج دئیے گئے

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

سرگودھا (ویب ڈیسک) سرگودھا کے نواحی گاﺅں 150 شمالی میں بابا نور شاہ کے میلہ کے دوران ڈانسر لڑکیوں کو اغواءکرکے زیادتی کرنے،ر قم چھیننے اور زبردستی رقص کروانے پر ایس ایچ او سلانوالی سمیت 10 پولیس اہلکاروں کو گرفتار کر کے جیل بھجوادیا گیا جبکہ تھانہ سلانوالی اور تھانہ شاہ نکڈر کے ایس ایچ او سمیت ایک درجن سے زائد پولیس اہلکاروں کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا تھا۔ ایس ایچ او تھانہ سلانوالی اختر نواز، ایس ایچ او تھانہ شاہ نکڈر زاہد سکندر، اے ایس آئی نذیر بھٹی اور دیگر اہلکاروں کو ایف آئی آر میں شامل کیا گیا تھا۔ ایس ایچ او سلانوالی اور دیگر اہلکاروں کو گرفتار کرکے عدالت میں پیش کیا گیا تھا، عدالت کے حکم پر تمام ملزموںکو جیل بھجوادیا گیا۔ ذرائع نے انکشاف کیا ہے کہ حکام بالا کی طرف سے میڈیا رپورٹس کے بعد واقعہ کا نوٹس لئے جانے پر بعض پولیس افسروں نے مقدمہ کی مدعی لڑکی ڈانسر کرن شہزادی اور ذمہ دار پولیس اہلکاروں کے درمیان مصالحت کروادی تھی، ڈانسر لڑکی کرن شہزادی نے اس بنا پر پولیس سے مصالحت کرلی تھی کہ ان کے تھیٹر مالکان نے مختلف مقامات پر شو کرنے ہوتے ہیں اور تھیٹر مالکان پولیس سے لڑائی کے متحمل نہیں ہوسکتے تاہم عدالت نے مصالحت کے باوجود ذمہ دار پولیس اہلکاروں کو جیل بھجوانے کے احکامات جاری کردئیے۔ آئی جی پنجاب پولیس مشتاق سکھیرا نے بھی واقعہ کا سخت نوٹس لیتے ہوئے رپورٹ طلب کرلی ہے۔

مزید : سرگودھا