برطانوی اراکین پارلیمنٹ کو کس شرمناک ترین چیز کا سب سے زیادہ شوق ہے؟ غیر اخلاقی حرکتیں منظر عام پر آگئیں، بڑی شرمندگی

برطانوی اراکین پارلیمنٹ کو کس شرمناک ترین چیز کا سب سے زیادہ شوق ہے؟ غیر ...
برطانوی اراکین پارلیمنٹ کو کس شرمناک ترین چیز کا سب سے زیادہ شوق ہے؟ غیر اخلاقی حرکتیں منظر عام پر آگئیں، بڑی شرمندگی

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لندن (نیوز ڈیسک) کسی بھی قوم کے رہنماؤں سے توقع کی جاتی ہے کہ وہ اپنے کردار اور مثال سے قوم کی رہنمائی اور اخلاقی تربیت کریں لیکن جس قوم کے رہنما پارلیمنٹ میں بیٹھ کر اپنے کمپیوٹروں پر فحش فلمیں دیکھنے کے عادی ہوچکے ہوں اس کی اخلاقی حالت کا اندازہ لگانا مشکل نہیں۔

برطانوی میڈیا نے انکشاف کیا ہے کہ گزشتہ ایک سال کے دوران برطانوی پارلیمنٹ سے 2 لاکھ 47 ہزار بار فحش ویب سائٹوں کو وزٹ کیا گیا، جو کہ ماہانہ 20 ہزار مرتبہ سے زائد بنتا ہے۔ اخبار ’’ڈیلی سٹار‘‘ کا کہنا ہے کہ ارکان پارلیمنٹ کی طرف سے فحش مواد دیکھنے کی شرح چھٹیوں کے دور میں مزید زیادہ رہی۔ اپریل کے مہینے میں ارکان نے پارلیمنٹ میں قیام کے دوران ماہانہ 42 ہزار سے زائد مرتبہ فحش ویب سائٹوں کو وزٹ کیا جبکہ موسم خزاں کی چھٹیوں کے دوران اکتوبر کے مہینے میں یہ تعداد 30 ہزار مرتبہ سے زائد رہی۔

مزید ُڑھیں:فحش مواد دیکھنا کیوں فوراً چھوڑ دینا چاہیے؟ سائنس نے بتا دیا

یہ حیرت انگیز معلومات برطانوی قانون ’’فریڈم آف انفرمیشن ایکٹ‘‘ کے تحت جاری کی گئی تھیں اور بعدازاں برطانوی میڈیا نے یہ باتیں ساری دنیا کے سامنے کھول دیں۔ اخبار کا کہنا ہے کہ جب اس سلسلے میں پارلیمنٹ ہاؤس سے رابطہ کیا گیا تو ایک اہلکار نے معاملے پر پردہ ڈالنے کیلئے کہا کہ کمپیوٹروں پر خود بخود کھلنے والی قابل اعتراض ویب سائٹوں اور پاپ اپ ونڈوز کی وجہ سے اس قسم کے اعداد و شمار سامنے آئے۔ ان کا موقف تھا کہ اصل میں فحش مواد دیکھنے کی شرح بہت کم ہے۔

ادارے ٹیکس پیئر الائنس کے سربراہ جانتھن ایسابی نے اس جواب پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ماہانہ ہزاروں بار فحش ویب سائٹوں کو وزٹ کرنے کا الزام پاپ اپ ونڈوز پر نہیں ڈالا جاسکتا۔ انہوں نے اس بات پر سخت افسوس کا اظہار کیا کہ برطانوی رہنما قوم کے ٹیکس کی رقم پر پارلیمنٹ میں قیام کے دوران اپنے اصل کام کی بجائے شرمناک مشاغل میں وقت گزارتے ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس