لیبیا کی عدالت کا سیف الاسلام قذافی کو 7ساتھیوں سمیت سزائے موت کا حکم

لیبیا کی عدالت کا سیف الاسلام قذافی کو 7ساتھیوں سمیت سزائے موت کا حکم

تریپولی (مانیٹرنگ ڈیسک)لیبیا کی مقامی عدالت نے معمر قذافی کے صاحبزادے سیف الاسلام سمیت ان کے 7ساتھیوں کو جنگی جرائم کے الزام میں سزائے موقت کا حکم سنا دیاہے۔تفصیلات کے مطابق عدالت نے معمر قذافی کے بیٹے سیف الاسلام کو جنگی جرائم اور پرامن مظاہرین پر ریاستی طاقت کے استعمال پرسزائے موت کا حکم دے دیا جب کہ عدالت نے سابق انٹیلی جنس چیف، سابق وزیراعظم بغدادی المحمدی سمیت دیگر 7 مجرموں کو بھی فائرنگ کر کے ہلاک کرنے کی سزا سنائی۔ پراسیکیوٹر آفس کے مطابق جنگی جرائم اورپرامن مظاہرین پر ریاستی طاقت کا استعمال کرنے کے جرم میں 8 دیگر سابق افسران کو عمر قید جب کہ 7 افراد کو 12 سال قید اور مقدمے میں نامزد 4 افراد کو رہا کردیا گیا ہے۔عدالت کی جانب سے سیف الاسلام اوران کے ساتھیوں کو سنائی گئی سزا کو اعلی عدلیہ میں چیلنج کیا جاسکتا ہے جب کہ عالمی عدالت انصاف اور انسانی حقوق کی تنظیموں نے لیبیا کی مقامی عدالت کی جانب سے سیف الاسلام اور ان کے ساتھیوں کو دی گئی سزا پر ہونے والے ٹرائل اورملک کے ناقص عدالتی نظام پراپنے خدشات کا اظہارکیا ہے۔ملزمان کے خلاف قتل، اغوا، ریپ، لوٹ مار، تخریب کاری، پبلک فنڈز میں غبن، عوام کو اکسانے کی سازش اور قومی یکجہتی کو نقصان پہنچانے کے الزامات لگائے ہیں۔واضح رہے کہ لیبیا کی عبوری حکومت نے سابق حکمران معمرقذافی کے صاحبزادے سیف الاسلام کو نومبر2011 میں ساتھیوں سمیت گرفتارکیا تھا

مزید : صفحہ اول