دسمبر2017 ء تک 10 ہزار 306 میگاواٹ اضافی بجلی سسٹم میں شامل ہو جائیگی ،اسحق ڈار

دسمبر2017 ء تک 10 ہزار 306 میگاواٹ اضافی بجلی سسٹم میں شامل ہو جائیگی ،اسحق ڈار

اسلام آباد (آئی این پی) قومی اسمبلی میں وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ موجودہ حکومت نے ملک سے لوڈشیڈنگ اور توانائی کے بحران کے مکمل خاتمے کا تہیہ کررکھا ہے‘ تربیلا فور‘ نیلم جہلم اور داسو پاور پراجیکٹ سممیت متعدد منصوبے تیزی سے تکمیل پزیر ہیں‘ دسمبر 2017ء تک 10ہزار 306 میگا واٹ اضافی بجلی سسٹم میں شامل کرلی جائے گی جبکہ 2018 میں ہماری حکومت کی مدت مکمل ہونے پر مزید 14 ہزار میگا واٹ کے منصوبے انڈر پراسس ہونگے جن میں ساڑھے چار ہزار میگا واٹ کی گنجائش کا دیامر بھاشا ڈیم‘ تربیلا فائیو اور چین کی سرمایہ کاری سے لگنے والے کوئلے سے بننے والی بجلی کے منصوبے شامل ہیں‘ 15 ارب ماہانہ کا سرکلر ڈیٹ ختم کردیا۔ وزیر خزانہ منگل کو ایوان میں شیخ رشید احمد اور دیگر ارکان کی جانب سے ملک میں لوڈشیڈنگ بارے قرارداد پر کئے گئے اظہار خیال کے جواب میں خطاب کررہے تھے۔ اسحاق ڈار نے کہا کہ حکومت کی معاشی پالیسیوں کی وجہ سے ملک میں 42 سال میں بینکی قرضوں پر پہلی بار شرح سود صرف 7 فیصد ہے بجلی کی پیداوار کا 82 فیصد ریونیو وصول ہوتا ہے 18 فیصد بلنگ نہیں ہوتی‘ ملک میں پیداوار اور طلب کے خوف کی وجہ سے بجلی کی لوڈشیڈنگ ہوتی ہے اس وقت 45 سو میگا واٹ کا شارٹ فال ہے اگر بجلی کی پیداوار پوری ہو تو سرمایہ کاری میں اضافہ ہوگا سات ہزار سے زائد میگا واٹ کے منصوبے زیر تکمیل ہیں آئندہ تین سال میں دس ہزار میگا واٹ سسٹم میں شامل کئے جائیں گے دسمبر 2017 تک دس ہزار تین سو چھ میگا واٹ سسٹم میں شامل کرلیں گے۔

ڈار

مزید : صفحہ آخر