پولیس تفتیشی ونگ فنڈز فراہمی کیس‘آئی جی سندھ کی رپورٹ پھر مسترد‘چیف سیکرٹری 4 اگست کو طلب

پولیس تفتیشی ونگ فنڈز فراہمی کیس‘آئی جی سندھ کی رپورٹ پھر مسترد‘چیف ...
پولیس تفتیشی ونگ فنڈز فراہمی کیس‘آئی جی سندھ کی رپورٹ پھر مسترد‘چیف سیکرٹری 4 اگست کو طلب

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک)سپریم کورٹ نے پولیس کے تفتیشی ونگ کو فنڈز کی فراہمی کے حوالے سے آئی جی سندھ کی رپورٹ ایک بار پھر مستردکرتے ہوئے سماعت 4 اگست تک ملتوی کر دی۔تفصیلات کے مطابق آئی جی سندھ نے تفتیشی ونگ کو فنڈز کی فراہمی کے حوالے سے رپورٹ سپریم کورٹ میں جمع کرائی جس پر عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ آئی جی سندھ کی پیش کردہ رپورٹ تسلی بخش نہیں۔اس پر آئی جی سندھ نے کہا تفتیشی فنڈز کیلئے ڈیٹا مکمل نہیں ہے ‘جسٹس امیر ہانی مسلم کی سربراہی میں 3 رکنی بنچ نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا بتایا جائے تفتیشی ونگ کو فنڈز کی فراہمی کا کیا نظام ہے انہوں نے سیکرٹری فنانس کوفنڈز کی فراہمی کا مکمل ریکارڈ پیش کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا اگر جائزہ لیں تومعلوم ہو گاپولیس کو 829 روپے فی مقدمہ تفتیش کیلئے دیئے گئے جسٹس امیر ہانی مسلم نے اپنے ریمارکس میں کہا آپ کو شہید پولیس والوں کی فکر نہیں ہے اورہم پولیس کی آپریشنل سرگرمیوں پر تبصرہ نہیں کرنا چاہتے۔انہوں نے کہا اے آئی جی فنانس دوسرے محکمے سے لایا گیا جس کے آنے سے بیڈگورننس مزید ابتر ہو گئی انہوں نے آئی جی سندھ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا آپ کے آنے سے کرپشن میں 3 گنا اضافہ ہوا بہتر یہی ہے کہ تفتیشی نظام کو بہتر بنایا جائے ۔عدالت نے مقدمے کی سماعت 4 اگست تک ملتوی کرتے ہوئے آئندہ سماعت پر چیف سیکرٹری سندھ کو طلب کر لیا۔

مزید : کراچی