دشمن پاکستان کو غیر مستحکم کرنے کیلئے دہشتگردی کروا رہے ہیں ،ثالثی عمل کو خراب کرنے والے سازشی عناصر سے بچنا ہو گا:راحیل شریف

دشمن پاکستان کو غیر مستحکم کرنے کیلئے دہشتگردی کروا رہے ہیں ،ثالثی عمل کو ...
دشمن پاکستان کو غیر مستحکم کرنے کیلئے دہشتگردی کروا رہے ہیں ،ثالثی عمل کو خراب کرنے والے سازشی عناصر سے بچنا ہو گا:راحیل شریف

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

راولپنڈی (مانیٹرنگ ڈیسک)آرمی چیف جنرل راحیل شریف نے کہاہے کہ پاکستان اور افغانستان ایک دوسرے سے علیحدہ نہیں ہوسکتے ،ہمارے دشمن پاکستان کو غیر مستحکم کرنے کیلئے دہشتگرد ی کروا رہے ہیں ،پاکستان کے ثالثی عمل کو خراب کرنے والے سازشی عناصر سے بچنا ہو گا ۔

آرمی چیف نے اٹلی کے سینٹر آف انٹیلی جنس کا دورہ کیا اور اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے انٹرنیشنل سیکیورٹی پر پاکستانی نقطہ نظر کو عالمی برادری کے سامنے رکھا جسے عالمی برادی کی جانب سے بے حد سراہا گیا ۔آرمی چیف کا کہناتھا کہ دہشتگردی کے خاتمے کیلئے ضرب عضب شروع کیا گیا ہے ، آپریشن ضرب عضب پاکستان اور بیرون ملک دنیا میں امن قائم کرے گا ،دہشتگردوں کو دوبارہ کہیں بھی منظم نہیں ہونے دیا جائے گا ،دہشتگردی کے خاتمے کیلئے گلوبل رسپانس کی ضرورت ہے ۔

آرمی چیف کا کہناتھا کہ پاکستان افغانستان میں امن قائم کرنے  کیلئے  ثالثی کر دار جاری رکھے اور ساتھ ساتھ ثالثی عمل کو خراب کرنے والے سازشی عناصر سے بچنا ہو گا ۔آرمی چیف کا کہناتھا کہ ہمارے دشمن پاکستان کو غیر مستحکم کرنے کیلئے دہشتگردی کروا رہے ہیں ،آپریشن ضرب عضب کے ذریعے دہشتگردی کو ختم کر کے ہی دم لیں گے اور دہشتگردوں کو ان کے منطقی انجام تک پہنچایا جائے گا ۔

راحیل شریف نے کہا کہ دہشتگردی نے پاکستان اور افغانستان کی مشترکہ جڑوں پر حملہ کیا ، پاکستان اور افغانستان کا مستقبل ایک دوسرے س جڑا ہوہے اس لیے جب تک ملک میں امن قائم نہیں ہو گا جب تک دوسرے میں نہیں ہوتا ،پاکستان افغانستان میں قیام امن کیلئے اپنا کردار ادا کرتا رہے گا ۔انہوں نے کہا کہ مصالحتی کوششوں کو دنیا کی انٹیلی جنس تسلیم کرتی ہے ۔

مزید : قومی /اہم خبریں