انتظامی کمزوریوں پر ایچی سن کالج کے پرنسپل کو بورڈ آف گورنرنے متفقہ طور پر فارغ کیا: گورنر پنجاب‎

انتظامی کمزوریوں پر ایچی سن کالج کے پرنسپل کو بورڈ آف گورنرنے متفقہ طور پر ...

لاہور(نمائندہ خصوصی) پنجاب کے گورنر رفیق رجوانہ نے کہا ہے کہ ایچی سن کالج کے پرنسپل ڈاکٹر آغا غضنفر کو قانون اور قاعدے کے مطابق عہدے سے ہٹایا گیا ہے جس کی باقاعدہ منظوری بورڈ آف گورنر نے متفقہ طور پر دی، اس معاملے میں کسی قسم کی بے ضابطگی کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا۔

روزنامہ پاکستان سے خصوصی گفتگومیں ایچی سن کالج کے پرنسپل کو بڑے گھرانوں کے سپوتوں کو میرٹ سے ہٹ کر داخلہ نہ دینے کی پاداش میں عہدے سے فارغ کرنے سے متعلق سوال کے جوا ب میں گورنر پنجاب نے کہا کہ ڈاکٹر آغا غضنفر کے خلاف بورڈ آف گورنر کو ڈسپلن کے حوالے سے بعض شکایات موصول ہوئی تھیں جس کے بعد بورڈ آف گورنر کا باقاعدہ اجلاس طلب کیا گیا۔اجلاس میں تمام ارکان نے متفقہ طور پر ڈاکٹر غضنفر کو عہدے سے فارغ کرنے کا فیصلہ لیا۔ اجلاس میں صرف ایک رکن نے اختلافی رائے دی تھی اور کہا تھا کہ پرنسپل کو فوری عہدے سے نہ ہٹایا جائے ، انہیں مزید موقع دیا جائے اور اس حوالے سے پرنسپل صاحب کا موقف جاننا بھی ضروری ہے تاہم بعد میں وہ بھی مان گئے۔

گورنر پنجاب نے کہا کہ داخلوں میں میرٹ سے ہٹ کر کوئی کارروائی نہیں کی گئی اور نہ ہی اس حوالے سے کسی قسم کا دباﺅ تھا.یہ بھی کہا گیا  آغا غضنفر انتظامی طورپر بے حد کمزور تھے اور اس حوالے سے بھی شکایات تھیں ۔

مزید : لاہور