والدین کی مرضی کے خلاف شادی پر پچھتاوا،دو سہلیوں نے خلع کے دعوے دائر کردیئے

والدین کی مرضی کے خلاف شادی پر پچھتاوا،دو سہلیوں نے خلع کے دعوے دائر کردیئے

  

لاہور(نامہ نگار)علامہ اقبال ٹاون کی دو سہیلیوں نمرہ اور سائرہ نے سینئر سول جج کی عدالت میں خلع کی بنیاد پر طلاق کے دعوے دائر کر دیئے، دعوے میں موقف اختیار کیا ہے کہ والدین کی مرضی کے خلاف شادی کر کے پچھتاوے کے سوا کچھ نہ ملا۔ سینئر سول جج کی عدالت میں علامہ اقبال ٹاؤن ن کی نمرہ اور سائرہ نے طلاق کے دعوے دائر کئے ہیں۔ نمرہ نے موقف اختیار کیا کہ اس نے والدین کی مرضی کے بغیر مسلم ٹاون کے اعجاز سے شادی کی۔ اسے بتایا گیا تھا کہ وہ کاروبار کرتا ہے لیکن شادی کے بعد علم ہوا کہ اعجازکسی کے پاس ڈرائیور ہے۔ اس کے احتجاج کرنے پر اسے تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔ نمرہ نے کہا کہ حق مہر اور خرچہ چھوڑتی ہوں طلاق دلوائی جائے۔ دوسری جانب سائرہ کا دعوے میں موقف ہے کہ اس کے شوہر پرویز نے اسے سسرال لے جا کر نوکرانی بنادیا۔احتجاج کرنے پر اس کی ساس اور نندیں تشدد کرتی ہیں۔ ایسے گھر میں نہیں رہنا چاہتی لہذا خلع کی بنیاد پر طلاق دلوائی جائے۔ سینئر سول جج نے دونوں دعوے سماعت کے لئے متعلقہ فیملی عدالت میں بھجوا دیئے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 4 -