پنجاب میں رواں سال 6ماہ کے دوران 717بچے اغوا ہوئے، 587بازیاب کروائے گئے

پنجاب میں رواں سال 6ماہ کے دوران 717بچے اغوا ہوئے، 587بازیاب کروائے گئے

  

لاہور(محمد یونس باٹھ)پنجاب میں بچوں کے اغوا پر سپریم کورٹ کے از خود نوٹس لینے کے بعد گزشتہ روز پنجاب پولیس نے عدالت عظمی میں ایک تفصیلی رپورٹ جمع کروا دی ہے جس کے مطابق پنجاب بھر میں سال رواں کے 6ماہ کے دوران مجموعی طور پر717 بچوں کے اغوا کے مقدمات کا اندراج کیا گیا جبکہ ان میں سے 587بازیاب کروا ئے گئے اغوا کے سب سے زیادہ واقعات لاہور میں دیکھنے میں آئے جہاں 6ماہ میں اغوا کے196کیس درج ہوئے جن میں 220بچوں کو اغوا کیا گیا اور ان میں سے 197بچوں کو بازیاب کروا لیا گیا۔ ۔18سال سے کم عمر بچوں کے اوپر تلے ہونے والے واقعات نے زندہ دلان لاہور کو ہلا کر رکھ دیا۔اس حوالے سے سپریم کورٹ میں جو رپورٹ پیش کی گئی ہے اس میں اغوا کے واقعات کا 2015کے پہلے 6ماہ سے تقابلی جائزہ بھی شامل ہے ۔میڈیا رپورٹس کے مطابق بچوں کے اغوا کی وجہ ان کے جسمانی اعضاء کی فروخت ،بچوں کو بھکاری بنانے اور دیگر مذموم مقاصد ہیں ۔پنجاب پولیس کے مطابق سال 2015میں پنجاب بھر میں کل 1208اغوا کے مقدمات کا اندراج ہوا جن میں سے 684مقدمات کو خارج کر دیا گیا،448 کے چالان پیش کئے گئے ۔ان مقدمات میں کل 1134بچوں کو اغوا کیا گیا جن میں سے 1049کو بازیاب کروا لیا گیا جبکہ 31مقدمات کی ابھی بھی تفتیش جاری ہے اور 41مقدمات کو تاحال ٹریس نہیں کیا جا سکا ۔بازیاب نہ کروائے جانے والے 61بچوں میں سے 41کو نامعلوم افراد نے جبکہ 20کو نامزد ملزمان نے اغوا کیا ہے دوسری جانب رواں سال کے پہلے 6ماہ میں کل اغوا کے پنجاب بھر میں 717مقدمات درج کئے گئے جن میں سے 368مقدمات کو خارج کر دیا گیا 219کے چالان عدالت میں پیش کئے گئے ۔کل ملا کر رواں سال کے پہلے 6ماہ میں پنجاب بھر میں 681بچوں کو اغوا کیا گیا جن میں سے 587 کو بازیاب کروا لیا گیا 119مقدمات کی تاحال تفتیش جاری ہے جبکہ 10مقدمات کا تاحال ٹریس نہیں کیا جا سکا ہے ۔بازیاب نہ کئے جا سکنے والے 94بچوں میں سے 41کو نامعلوم ملزمان نے جبکہ53کو نامزد ملزمان نے اغوا کیا ہوا ہے۔پولیس کے مطابق رواں سال میں سب سے زیادہ اغوا کے مقدمات کا اندراج لاہور میں ہوا جہاں 196مقدمات درج کئے گئے جن میں سے 124مقدمات کو کینسل کر دیا گیا 27کے چالان پیش کئے گئے 3مقدمات تاحال ٹریس نہیں کئے جا سکے اور 42کی ابھی تفتیش جاری ہے ۔لاہور میں کل 220بچوں کو اغوا کیا گیا جن میں سے 197کو بازیاب کروا لیا گیا ۔بازیاب نہ کروائے جا سکے 23بچوں میں سے 18کو نامعلوم ملزمان جبکہ 5کو نامزد ملزمان نے اغوا کیا ہے ۔سال 2015میں لاہور میں کل 320بچوں کے اغوا کے مقدمات درج ہوئے تھے جن میں 213کو خارج کر دیا گیا جبکہ اغوا کئے گئے 354مغویوں میں سے 326کو بازیاب کروا لیا گیا تھا ۔تاحال مغویوں کی تعداد 28ہے جن میں سے 20کو نامعلوم اور 8کو نامزد ملزمان نے اغوا کیا ہوا ہے۔پولیس کے مطابق پنجاب بھر میں لاہور کے علاوہ باقی 9ریجن میں اغوا کے کل521مقدمات رواں سال کے پہلے 6ماہ میں پیش آئے ان میں سے 244مقدمات خارج ہوئے192 کے چالان پیس کئے گئے کل ملا کر 461کو اغوا کیا گیا جن میں سے 390بچوں کو بازیاب کروایا جا سکا۔دوسری جانب سال 2015میں کل 888اغوا کے مقدمات درج کئے گئے جن میں 780بچوں کو اغوا کیا گیا اور 723کو بازیاب کروا لیا گیا جبکہ ابھی 33بچوں کو بازیاب نہیں کروایا جا سکا ہے۔پولیس کے مطابق رواں سال کے پہلے 6ماہ میں شیخو پورہ ریجن میں 40بچوں کے اغوا کے مقدمات درج کیئے گئے جن میں سے 16کو خارج کر دیا گیا 16کے چالان پیش کئے گئے اور 8کی تفتیش جاری ہے ۔شیخوپورہ ریجن سے کل 41بچوں کو اغوا کیا گیا جن میں سے 38کو بازیاب کروا لیا گیا 3کو بازیاب کروانے کے لئے تفتیش جاری ہے۔گوجرانوالہ ریجن میں بچوں کے اغوا کے کل 32مقدمات درج ہوئے جن میں سے 13کو خارج کر دیا گیا 12کے چالان پیش کئے گئے ۔کل ملا کر 33بچوں کو اغوا کیا گیا جن میں سے 29کو بازیاب کروا لیا گیا اور 4کو بازیاب کروانے کے لئے تفتیش جاری ہے۔راولپنڈی ریجن میں 76بچوں کے اغوا کے مقدمات درج کئے گئے جن میں سے 33کو کینسل کر دیا گیا جبکہ 25کے چالان عدالت میں پیش کئے گئے ۔۔ریجن سے کل ملا کر 74بچوں کو اغوا کیا گیا جن میں سے 52کو بازیاب کروا لیا گیا ۔22بچوں کو بازیاب کروانے کے لئے تفتیش جاری ہے۔سرگودھا ریجن میں بچوں کے اغوا کے کل 99مقدمات درج کئے گئے جن میں سے 57کو خارج کر دیا گیا ۔کل ملا کر 102بچوں کو اغوا کیا گیا جن میں سے 85کو بازیاب کروا لیا گیا ۔17بچوں کی بازیابی کے لئے تفتیش جاری ہے۔فیصل آباد ریجن میں کل 43اغوا کے مقدمات درج کئے گئے جن میں سے 10کو کینسل کر دیا گیا ۔55مغویوں میں سے 52کو بازیاب کروا لیا گیا جبکہ 3کو بازیاب کروانے کے لئے تفتیش جاری ہے ۔ملتان ریجن میں 60بچوں کے اغوا کے مقدمات درج کئے گئے جن میں سے 27کو خارج کر دیا گیا ۔ان مقدمات میں 53مغوی بچوں میں سے 51کو بازیاب کروا لیا گیا جبکہ 2بچوں کی بازیابی کے لئے تفتیش جاری ہے ۔ساہیوال ریجن میں بچوں کے اغوا کے کل 54مقدمات درج کئے گئے جن میں سے 26کو خارج کر دیا گیا ۔36مغوی بچوں میں سے 27کو بازیاب کروا لیا گیا ہے جبکہ 9کو تاحال بازیاب کروانے کے لئے تفتیش کا عمل جاری ہے۔ڈیرہ غازی خان ریجن میں کل ملا کر 30بچوں کے اغوا کے مقدمات درج کئے گئے جن میں سے 8کو خارج کر دیا گیا ۔32مغویوں میں سے 22کو بازیاب کروا لیا گیا جبکہ تاحال 10مغویوں کی بازیابی کے لئے تفتیش کا عمل جاری ہے ۔بہاولپور ریجن میں کل 87بچوں کے اغوا کے مقدمات درج ہوئے جن میں سے 54کو خارج کر دیا گیا ۔35مغویوں میں سے 34کو بازیاب کروا لیا گیا جبکہ 1مغوی کی بازیابی کے لئے کوششیں جاری ہیں ۔

مزید :

صفحہ آخر -