بلدیاتی نظام کے ثمرات عوام تک پہنچائے جائیں ،سیاسی حلقے

بلدیاتی نظام کے ثمرات عوام تک پہنچائے جائیں ،سیاسی حلقے

  

بونیر(ڈسٹرکٹ رپورٹر )تحصیل گدئیزی کے تمام سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں اور منتحب بلدیاتی ڈسٹرکٹ اور تحصیل ممبران نے موجودہ بلدیاتی نظام کو عوام کی مفاد میں قرار دیتے ہوئے وولئیج کونسلز کے ناظمین اور ممبران سے مطالبہ کیاہے کہ وہ اس نظام کے ثمرات کو عوام تک پہنچائے ور نہ ممبران قومی و صوبائی اسمبلی اس نظام کے ناکام کرنے کے درپے ہے ۔ممبران قومی و صوبائی اسمبلی کا کام گلی کوچوں کی پختگی کرنا نہیں بلکہ بہتر قانون سازی ہے مگر وہ کمیشن کی خاطر کروڑوں روپے خرچ کرکے اپنے اپ کو ان ایوانوں تک لے جاتے ہیں ۔منتحب بلدیاتی ممبران پارٹی اور سیاست سے بالا ترہوکر ترقیاتی منصوبے مکمل کریں ۔تھصیل گدئیزی کے عوام نے پورے بونیر میں بہت سے تکالیف برداشت کئے اور اب بھی یہی تینوں یو نین کونسلز دہشت گردوں کے نشانے پر ہے جو وقتا پہ وقتا کاروائی کرکے عوام میں خوف وہ خراس پھیلارہے ہیں ۔ہم سب کو مل کر پائیدار امن کے لئے مل جل کر کام کرنا ہوگا ۔۔ان خیالات کا اظہار اے این پی کے صوبائی رہنماء میاں سید لائق باچا ۔جماعت اسلامی کے سابق ضلعی امیر محمد خنیف ۔اے این پی کے ضلعی رہنماء افسر خان اف سلطان وس ،ضلع کونسل کے ممبران ریاض خان اف ملک پور ،سردار علی خان ۔سید اختیار باچا ،تحصیل کونسل ڈگر کے نائب ناظم خالد خان ،تحصیل کونسل ڈگر کے ممبر شیرین خان ۔مسلم لیگ ن کے ضلعی رہنماء جہانبر خان ،وولئیج کونسل سلطان وس کے ناظم راضی ملک خان نائب ناظم نعیم خٹک نے وولئج کونسل سلطان وس کے دفتر کے افتتاح کے موقع پر ایک بڑٰ ی تقریب سے خطاب کے دوران کیا ،تقریب میں تحصیل گدئیزی کے تمام سیاسی جماعتوں کے کارکنان اور اہم شحصیات نے کثیر تعداد میں شر کت کی ۔مقر رین نے وولئیج کونسل سلطان وس کے ناظم اور جملہ ممبران کی اس اقدام کو بے حد سراہا جنہوں نے بلا کسی تفریق تمام سیاسی جماعتوں کے قائیدین کو ایک فلیٹ فارم مہیا کی ۔مقررین نے کہا کہ موجودہ بلدیاتی نظام سپریم کورٹ اف پاکستان کے حکم ناٖفذ ہواہے مگر صوبہ خیبر پختون خواہ کی حکومت نے ہمارے صوبہ میں پہل کرکے بہترین نظام قائم کی ہے ۔ہر دور میں فوجی ڈکٹیٹر نے اپنی اقتدار کو دوام دینے کے لئے بلدیاتی نظام قائم کئے مگر وہ ناکامی سے دوچار ہوئے ۔کیو نکہ پہلی مرتبہ ایک جمہوری حکومت نے بلدیاتی نظام نافذ کی ہے ۔اب موجودہ نطام کی ناکامی اور کامیابی کا انحصار منتحب بلدیاتی ممبران پر ہے ۔مقررین نے ممبران صوبائی اور قومی اسمبلی پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ انکا کام بہتر قانون سازی کرنا ہے مگر اپنے کمیشن کی خاطر وہ گلی کوچوں کی پختگی میں لگے ہوئے ہیں ۔بلدیاتی ممبران اپنے اپنے وولئیج کونسلوں کے چھوٹے چھوٹے مسائل تھانوں اور عدالتوں کی بجائے خودحل کرنے کی کو شیش کرے ۔اور اپنے اختیارات کا ناجائز استعمال نہ کرے ۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -