بھارت حقیقت پسندی کا ثبوت دے کر حقائق تسلیم کریں: سید علی گیلانی

بھارت حقیقت پسندی کا ثبوت دے کر حقائق تسلیم کریں: سید علی گیلانی
بھارت حقیقت پسندی کا ثبوت دے کر حقائق تسلیم کریں: سید علی گیلانی

  

سرینگر (اے پی پی) مقبوضہ کشمیرمیں کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سید علی گیلانی نے بھارت کے انسانی حقوق کے علمبرداروں، آزادی پسند عوام اور بین الاقوامی سطح پر کشمیریوں کے حق میں آواز بلند کرنے والے ممالک کی کوششوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ اب وقت آگیا ہے کہ بھارت حقائق کو تسلیم کرکے حقیقت پسندی کا ثبوت دے۔ کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق سید علی گیلانی نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں کہاکہ ہم سمجھتے ہیں کہ اگردیرینہ تنازعہ کشمیر کوپُرامن طورپر حل نہیں کیاگیا تو جموںو کشمیر میں حالات اور زیادہ خراب ہوسکتے ہیں۔ انہوں نے عالمی طاقتوں سے ایک بارپھر اپیل کی کہ وہ 1947ءسے اس خطہ میں بڑے پیمانے پر جاری ہر قسم کے جسمانی، سیاسی، ثقافتی اور نفسیاتی تشدد کے خاتمے کیلئے بھارت پر دباﺅ بڑھائیں۔انہوں نے کہاکہ ہم اچھی طرح سے جانتے ہیں کہ بھارتی پارلیمنٹ اپنے فوجیوں کی درندگی کو سندِ جواز عطا کرکے اس سے بھی زیادہ سفاکیت سے کشمیریوں کی حق پر مبنی جدوجہد کو دبانے کےلئے اکساتی ہے ۔ حریت چیئرمین نے کہا کہ اس خوفناک صورتحال کے پیش نظر اپنی مظلوم قوم کی طرف سے عالمی ضمیر، بین الاقوامی اداروں خاص کر مسلم ممالک سے دردمندانہ اپیل کرتے ہیں کہ بھارت پر ہر سطح سے دباؤ ڈالیں کہ وہ یہاں کی حق وصداقت پر مبنی آواز کو سنے اور اس دیرینہ مسئلہ کو اقوامِ متحدہ کی قراردادوں کی روشنی میں حل کرے۔ انہوں نے پاکستانی عوام اور حکومت سے کہاکہ وہ چین، ترکی، سعودی عرب ، ایران اور برطانیہ سمیت مختلف ممالک پر اپنا اثرورسوخ استعمال کرکے بھارت پر دباؤ ڈالیںاورکشمیر سے متعلق اوآئی سی کا ایک خصوصی اجلاس بلا کر اس مسئلے کے حل کےلئے اتفاق رائے قائم کریں۔ سید علی گیلانی نے وادی کے طول وعرض میں پولیس کی چیرہ دستیوں پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ اگر نہتے کشمیریوں پر ظلم و تشدد کا سلسلہ ترک نہ کیا گیاتو اسکے سنگین نتائج برآمد ہوں گے جس کی تمام تر ذمہ دار ی قابض انتظامیہ پر عائد ہو گی ۔انہوںنے کہاکہ ہر ضلع سے ظلم وتشدد اور زیادتیوں کی اطلاعات موصول ہورہی ہیں۔انہوں نے کہاکہ رام پور چھتہ بل قمرواری میں پولیس اہلکاروں نے آٹھ جوانوں کو گرفتار کرلیا ہے جبکہ تحریک حریت کے ساتھ وابستہ ڈرائیور سجاد احمد پالا کو تشدد کا نشانہ بناکر تھانے میں بند کردیا گیااورپارٹی کے بلاک صدر غلام رسول کلو کے گھر پر بھی چھاپہ مارکر انکے دس سالہ بیٹے کو گرفتارکرلیا گیاہے۔انہوں نے کہاکہ چھتہ بل میں ایک پنڈت کے مکان میں پولیس سٹیشن قائم کیاگیا ہے جس کے اہلکار وںنے عام شہریوں کا جینا حرام کردیا ہے حتیٰ کہ ایمبولنس کو بھی بخشا نہیں گیا۔ سید علی گیلانی نے کہاکہ 22راشٹریہ رائفلز کے میجر نے عبدالرشید بٹ ساکن بومئی سوپور کے گھر پر چھاپہ مارااوراہلکاروںنے بیٹے کے بدلے اُس کی 76سالہ ماں کو شدید زدوکوب کیا جس کی وجہ سے اُس کی ٹانگ ٹوٹ گئی ہے۔ انہوں نے کہاکہ اسی کیمپ کے اہلکاروںنے ایک شہری عبدالرشید شیخ کو سٹرک پر برہنہ کرکے شدید تشدد کا نشانہ بنایا ۔ اس کے علاوہ جنوبی کشمیر کے ضلع کولگام، وسطی کشمیرسے گاندربل، ضلع کپواڑہ کے ژیرہ کوٹ اور لالہ پورہ لولاب سے بھی فوج کی طرف سے گھروں میں زبردستی داخل ہو کر توڑ پھوڑکرنے اور دھمکیاں دینے کی اطلاعات موصول ہورہی ہیں۔انہوں نے لوگوں سے بھی اپیل کی کہ اگر رات کے وقت پولیس کسی نوجوان کو گرفتار کرنے آئے گی تو تمام لوگ باہر اکٹھا ہو کر مزاحمت کریں۔

مزید :

بین الاقوامی -